تنقید

مہجور تہ آزاد سندی زہ لولہ نغمہ: اکھ تقابلی تجزیہ


روف احمد، اسسٹنٹ پروفیسر کشمیری/ریسرچ سکالر کشمیر یونیورسٹی

مہجورن تہ آزادن لیکھۍ اکثر نغمہ (وژن تہ غزل) ہم موضوع مضمونن ہندۍ یمن منز اکی اندازہ کتھ باونہ آمژ چھیہ۔ مگر پزر چھہ یہ زِ مہجور اوس زیٹھ ہمکال آزادس تہ گوڈہ چھہ مہجور کینہہ نوی تجربہ کران تہ تِمن پتہ چھہ آزاد تہِ تمی اندازہ پننۍ باتھ لیکھان تہ اکہِ اندازہ ونو اتھ تقلید کرن تہ آزادن چھہ واریاہن جاین مہجورس تقلید کورمت۔ مہجورن لیوکھ اکھ وژن، باغِ نشاط کے گلو، یس کافی مشہور سپد۔ یہِ وژن آو گوڈنچہِ لٹہِ 1934ء  یس منز پرنہ تہ اتھ پرنس چھیہ اہمیت زِ یہ وژن آو اکس تتھس مشاعرس منز پرنہ یتھ منز ہندوستان پیٹھہ آمتۍ فارسی، اردو تہ پنجابی زبانن ہندی شاعر ٲسۍ۔ حالانکہ مہجورس ییلہ اتھ مشاعرس منز دعوت دنہ آیہ مہجورن تھوو شرط زِ بہ پرہ تیلہِ اتھ مشاعرس منز کلامہ ییلہِ میہ کاشر باتھ پرنک اجازت میلہِ تہ کمیٹی کۆر درخواست منظور تہ یہ اوس مہجورن بجر زِ  تمۍ وۆن تیتین مشہور شاعرن منز کاشر کلامہ پرنہ باپتھ یس تسند وطن شناسی تہ زبان شناسی ہند تصور تہ یقین زندہ کران چھہ۔ عبدالاحد آزاد چھہ اتھ واقعس متعلق لیکھان۔

"1934 ء میں سرینگر کشمیر کی نمایش کمیٹی کے زیرِ اہتمام ایک مشاعرہ منعقد ہوا۔ ہندوستان کے مشہور شعراء سرکاری طور مدعو کے گئے۔ مہجور کو بھی شمولیت مشاعرہ کی دعوت دی گئی۔ مشاعرہ فارسی اردو اور پنجابی میں تھا۔ آپ نے یہ عذر پیش کیا کہ مشاعرہ غیر زبانوں میں ہے۔ میں کشمیر ی شاعر ہوں لہٰذا اگر کشمیری نظم پڑھنے کی اجازت ملے تو اس صورت میں شامل مشاعرہ ہوسکتا ہوں۔ کمیٹی نے فیصلہ کیا کہ کشمیری غزل کے ساتھ ایک اردو غزل بھی ہونی چاہئے اور کشمیری غزل باغ نشاط اور سیر ڈل کے موضوع پر ہوں۔ آپ نے یہ دونوں شرطیں صرف اس غرض سے منظور کیں کہ آپ کسی بہانے سے کشمیری زبان کو مشاعرے میں روشناس کرانا چاہتے تھے“  ۱؎

یہ اوس شاید گوڈنیک موقعہ ییلہ اکس قومی مشاعرس منز کاشر زبان تہ کاشر شاعر شامل سپدۍ تہ یہ اوس امہِ موجب اکھ تواریخی دوہہ یس ہرحال مہجورس نصیب سپد یا ییمہِ باپتھ مہجورن پہل کٔر۔ مہجورن یس ”باغِ نشاط کے گلو“ نغمہ پۆر سہ اوس پننہِ وقتہ اکھ نۆو تجربہ، اکھ نٔو آواز، اکھ نۆو مزازہ تہ اکھ نۆو لہجہ زِ نشاط باغ کس گلس پیٹھ ییہِ شاعر سندِ ذریعہ کینہہ وننہ تہ سہ تہِ اکس تژھہِ زبانہِ منز یۅسہ عام لوکن ہنز زبان ٲس۔

باغِ نشاط کے گلو

ناز کران کران وۅلو

خندہ کران کران وۅلو

مختہ ہران ہران وۅلو

ژاکھ ژہ یام در چمن

بوسہ کری ژیہ کوسمن

شوق چھہ کیاہ یمبرزلن

کھاسۍ ہران ہران وۅلو

سنگ دلا ستم گرا

رحم ژیہ چھے نہ اکھ ذرا

ضایع گیس بہ سۅندرا

ماے بران بران وۅلو

باوہ کمِس بہ یم ستم

مارہ متیو ژہ بوزتم

ہولہ گجِس بہ دمبدم

لول ہران ہران وۅلو

یارہ گوژھکھ نہ دور نے

گۆژھنہ لدتھ یہ لورنے

سوز یہ مہجورنے

روز پران پران وۅلو

دپان مہجورن یہ وژن پۆر مشاعرس منز محمود شہری ین تہ تسندِ ترنم سیتۍ گریزے یہ سارے محفل تہ لوکن منز گوو یہ وژن زبان زد۔ بقولِ آزاد زِ بییہِ دوہ آو ”مارٹنڈ“ اخبارس منز یہِ وژن چھپاونہ تہ سیتۍ اوس اتھ وژنس متعلق اتھ اخبارس منزلیکھنہ آمت۔ ےس کانسہِ شاعرس یا کنہِ کاشرس باتس متعلق گوڈنچہِ لٹہِ اخبارس منز چھپنک ردِ عمل اوس۔ بقولِ آزادؔ:

”حضرت مہجورؔ کاشمیری کی وہ طرب آمیز و ترنم انگیز کشمیری غزل جو آج کل کشمیر کے ہر فرد بشر کی زبان پر بلا امتیاز جاری ہے۔ جس نے عوام الناس کے علاوہ خاص خاص سوسائٹیوں میں بھی غیر معمولی شہرت و مقبولیت حاصل کی ہے“   ۲؎

مہجورن یہِ باتھ آو کینژھو کمیٹی یو طرفہ گراما فون ریکاڑ کرناو نہ تہ پتہ آو یہِ باتھ کشیرِ ہندین گامن شہرن تہ قصبن منز امی گراما فون ریکاڑ رکہ ذریعہ بوز ناونہ تہ دپان یہِ باتھ گوو تیوت مشہور زِ بقولِ آزادؔ:

”۴۳۹۱ء میں سب سے پہلے کولمبا کمپنی کی غزل ”باغ نشاط کے گلو“کا ریکارڑ آیا۔ غزل کی مقبولیت کی وجہ سے اس کی قیمت عام ریکارڑوں سے زیادہ رکھی گئی تھی۔ بکری بھی اس کی زیادہ ہوئی۔“  ۳؎

امہِ کتھِ ہند سپد گوڈے ذکر زِ مہجور نین کینژن باتن ہند تقلید کور آزادن تہِ بلکہ لیکھِن تمی اندازتہ تتھی بحرِ تہ ردیفس قافےس منز۔ مگر آزادس چھ تِمن باتن منز تہِ پنن اندازتہ پنن لہجہِ۔ ووں گوو اکے زمانہ تہ اکی زبان آسنہ کِنی چھ ےِمن منز اکھ ہشر باسان تہ سہ ہشرچھ ضروری تہِ تکیازِ یہِ اوس اکہِ طریقہ مہجورنہِ باتہ چہِ شہرژ ہند احساس سپدِتھ آزادن امی طریقہ پنن باتھ لیوکھمت۔ اتھ نغمس منز چھِ بلکل اکے مزاز تہ اکے اندازمگر تہِ کرِتھ تہِ چھ مہجور الگ تہ آزادالگ باسان۔ گوڈ وچھو مہجورن ”باغ نشاط کے گلو“ نغمہ وچھِتھ آزادن باتھ:

باغِ نسیم کے گلو

باشہِ کران کران ولو

ساز کران کران ولو

ناز کران کران ولو

روشہِ ژ آکھ در چمن

موختہ جورے ژے شبنمن

توشہِ بران چھ یوسمن

مشک ہران ہران ولو

چون ہوس چھ مسولن

سنبلن تہ  رونبلن

ہول گومت چھ بلبلن

لول بران بران ولو

چھاو پھلے ژ گوشہِ نی

کراو کرے بہ پوشنی

پوشہِ متین منوش نی

ہوشہ پھران پھران ولو

آزادو غرض مہ تھاو

اصل تہ عکس پرز ناو

غور کرِتھ قدم ژ تراو

یور ڈران ڈران ولو

مہجورؔ سپد باغِ نشاط کِس گلس کن مخاطب تہ آزادن وون پتہ پنن فراق باغِ نسیم کِس گلس۔ ےِم دوشوے باغ چھِ کشیرِ ہندی ز مغل باغ ےِم دوشوے ڈل جیل کین دون بٹھین پیٹھ واقع چھِ۔ اکھ چھ شالمار باغس دور پہن زبرون بالس دامنس تل تہ بیاکھ چھ حضرت بل کِس ڈل بٹھِس پیٹھ یتھ منز از کل کشمیر یونیورسٹی چھیہ۔ مہجورچھ باغِ نشاط کِس گلس ”ناز“ کرنا وان تہ ناز نخرکران کران نیک دعوت دِوان تہ آزاد چھ باغِ نسیم کس گلس گندِ باشہِ کران کران نیک خواہش ظاہر کران۔ ”ناز نخرن تہ گندباشن“ چھ الگ الگ احساس تہ الگ الگ انہار آسِتھ تہِ ژکہِ انسانی فطرتس سیتۍ ہوی ہشر تہِ امہِ کِنی چھِ دوشونی شاعرن ہندی دوشوے مصراکی انمانہ اسِتھ تہِ الگ الگ توثرووتلاوان۔ مہجورن شعرچھُ:

ژاکھ ژ یام در چمن

بوسہ کری ژے کوسمن

شوق چھ کیاہ یمبرزلن

کھاسی بران بران ولو

مہجورنؔ باغ نشاطک گل ےِتھے چمنس اندر اژان چھ تہ تس چھ کوسم میوٹھ کران تہ بوسہ دوان  تہ یہِ ڈینشِتھ چھِ یمبرزلن شوق سپدان تہ توے چھ ونان شاعر کھاسی بران بران ولو۔ اتھ برعکس چھ آزاد باغِ نسیم کِس گلس چمنس منز روشہِ روشہِ اژان وچھان تہ شبنم چھس موختہ جران تہ یوسمن چھ یہِ حال ڈیشِتھ توشان تہ شاعر چھس ونان ژولہ مشک ژھٹان ژھٹان۔

روشہِ ژ آکھ در چمن

مختہ جورے ژے  شبنمن

توشہِ بران چھ یوسمن

مشک ژھٹان ژھٹان ولو

دوشونی چھ اکوے موضوع شعرس منز مگر مہجورن ”ژ اکھ“ تہ آزادن ’روشہِ‘ےِم چھِ دوشوے بدون تاثر وتلاوان۔ سیودے باغ اژنہ کھتہ بہتر چھ”روشہِ“ پاٹھی باغس منز اژن زیادے پہن خوبصورت بنان۔مہجورنِس مصرس منز چھ تمِس کوسم بوسہ کران تہ آزادنِس مصرس منزچھس شبنم موختہ جران۔ بوسہ دنس چھ پنن حسن تہ ادا تہ موختہ جرنس چھ پنن مزاج۔ مگر شبنمس موختہ جرن چھ ہنا زیادے پہن خوبصورتی بڑاوان۔ گویا محبوب چھ اکے مگر محبوبس سیتۍ وابستہ تصور چھ دوشوے شاعر الگ الگ پاٹھی گران تہ یی چھ ےِمن دون نِش الگ الگ شاعرانہ طرز تہِ۔تریمِس شعرس منز چھ مہجورن محبوب سنگ دِل تہ بے رحم بنان یس نہ ذرا بھرتہِ انصاف تہ عار چھ تہ یہِ حال وچھِتھ چھ عاشق سوندر ہندی پاٹھی ضایہِ گژھان تہ توے چھس ونان ماے بران بران ولو۔ اتھ بر عکس چھ آزادنِس تریمِس شعرس منز تیتھ معشوق دید مان یوان یس وچھِتھ مسولن تہ سنبلن تام ہوش ڈلان چھِ تہ تسندِ امارچھِ بلبلس تام ہول گومت تہ توے چھس ونان لول بران بران ولو۔

سنگ دلا ستم گرا

رحم ژے چھے نہ اکھ ذرا

ضایہِ گیس بہ سوندرا

ماے بران بران ولو

                                                                          (مہجورؔ)

چون ہوس چھ مسولن

سنبلن تہ رونبلن

ہول گومت چھ بلبلن

لول بران بران ولو

                                                                           (آزادؔ)

دوشونی شاعرن نِش چھ موضوع کنے۔ محبوب تہ تس محبوبس سیتۍ عاشق سند محبت تہ وابستگی۔ مگر ےِمن دون شعرن منز چھ اکی سند محبوب سنگ دل تہ دویمہِ سند چھ تیوت خوبصورت زِ باقی پوشن چھِ امی سند ہوس گژھان۔دوےِم شعر چھ شاعری ہندِ اعتبارہنا زیادے پہن گوڈنکہِ شعر نِش معنہِ بورت۔ سنگ دِل معشوقس چھ اکے صفت تہ سہ صفت ہنا ولٹے ییمہِ سیتۍ تسند ظالمانہ انہار برونہہ کن یوان چھ۔ اتھ بر عکس چھ دویمِس شعرس منز معشوق سند حسن ہاونہ آمت تہ تییھ حسن یتھ پتھ باقی تس پیھ فلواہ گژھان چھِ۔ امہِ سیتۍ چھِ امِس معشوق سندی اکہِ کھوتہ زیادصفت برونہہ کن یوان۔ شعرس چھ اکھ لفظ یا اکھ تصور ہیور کھالان یا بون والان تہ توے چھِ شاعر سنز زبان اہم آسان شعرس منز کانہہ تصور یا معنے وتلاونہ باپتھ۔ مہجور سند ژورِم شعر چھ باوان زِ عاشق چھ ونان زِ بہ کس باو پننی ےِم ستم تہ ژے بغیر کس بوزیم تکیازِ ژے چھکھ میون یار تہ غم خار۔ ژ بوز تہ میانی ستم تہ میانی زار۔ بہ ہسا گجِس امہِ پریشانی سیتۍ دلس منز چھم عشقن زر۔ اے میانہِ معشوقہ ژ یکھنا تہ برکھنا لول تہ میہ ژلہن تِم ساری ستم تہ غم ےِم میہ چانہِ امار یا چانس فراقس منزژالنی چھِ پیوان۔ اتھ بر عکس چھِ آزادنِس ژورمِس شعرس منزعاشق ونان پننِس معشوقس زِ گوشن بہتھ (ژورِ بِہتھ، دورِ روزِتھ، پردن ژھایہِ روزِتھ) چھاو ژ پوشہِ پھلے تہ بہ کرے پوشن کراو تہ تمیک لطف تلہ بہ کراو کران کران۔ پوشہِ متین منوشن پھر ژ پانس کن ہوش تہ سے ہوش پھران پھران ولہ میانِس چمنس کن تہ میہ تہِ سپدِ دیدار نصیب۔ دوشوے شعر چھِ اکھ اکِس سیتۍ نکھ اسِتھ تہِ اکھ کِس نِش جدا گانہ تہ دوشوے چھِ معشوق سندِس طرزِ ادا ہس کن مخاطب۔ گوڈنیک شعر چھ معشوق سندِ عشقک غم، تسندِ راونک احساس، تسندِ بے وفایی ہند زر تہ تسنزِ بے رخی ہند ہمسوس تہ توے چھس ونان عاشق زِ ژے روس کس باوبہ سہ حال ےس میہ چانِس محبتس منز یا چانہِ جدایی منز سپد۔ اتھ برعکس چھ دویم شعر معشوق سند گوشن کن بہِتھ پوشن ہنز کراو کرِتھ پوشہِ متین انسانن ہنز بے ہوشی کن مخاطب تہ تِمن بے ہو شن ہوش انان انان تس نیک استدا۔ اکی سی معشوقس سیتۍ زالگ الگ تصور چھِ دوشونی شعرن الگ الگ مزاج ووتلاوان تہ شاعرن ہند شعرس سیتۍ ورتاو تہِ ظہر کران۔

باو کس بہ ےِم ستم

مار متیو ژ بوزتم

ہولہ گجِس بہ دمبدم

لول بران بران ولو

                                                                             مہجور)ؔ

چھاو پھلے  ژ گوشنے

 کراو کرے بہ پوشہِ نے

پوشہِ متن منوش نے

ہوش پھران پھران ولو

                                                                            (آزادؔ)

ےِمن دونونی لولہ نغمن ہندی آخری  شعر تہِ چھِ دون شاعرن  ہند اکھ اکھ ویوہار پیش کران یتھ منز شاعر سند مزاج فکر تران چھ تہ معشوقس سیتۍ تسند اظہار تہِ۔ مہجورس چھ احساس زِ میون معشوق گوژھ نہ میہ نِش دورن تہ میانہِ لولچ سوسر عمارتھ پییہِ وسی یوس میہ شوق تہ ذوق ہیھ تعمیر کرمژ آس۔ توے چھس عاجزی کران زِ روز مہجورن ساز بوزان تہ تمی سازچ آواز پران پران ولہ۔ اتھ بر عکس چھ آزاد اتھ پننِس آخری شعرس منز پانس کن ونان زِ ژتھا ودلس منزکانہہ تیتھ غرض ےس لولس مخالف آسہِ۔ ژے گژھی اصل تہ عکس پرزناونہ ےن تہ امہِ باپتھ روز حیسہ تہ ہشاری سان تراو قدم۔ ےِمن دوشونی تخلص دار شعرن منز چھ باسان زِ مہجورس مقابلہ چھ آزادن شعر کمزور۔ زبانہِ حسابہ تہِ چھنہ اتھ منز سہ زو ززیتہ یس امہِ برونٹھ امہِ کین باقی شعرن منز چھ تہ آزاد چھ پوتس سوکتھ ونان یتھ نہ اتھ باتس سیتۍ پتہ زیاد تعلق باسان چھ۔ اتین چھ آزاد لولہکہِ جذبہ منز نیبر نیرِتھ کتھ کران تہ لولس منز ہینہ ینہ بجایہِ چھ سہ عقل ورتاوان۔ ییمہِ سیتی تتھ سارسی لولہ جذبس ددار واتان چھ یس اوتام آزاد لولس متعلق یا پننِس معشوقس متعلق باوان چھ۔ اتھ بر عکس چھ مہجورن شعر امہِ برونہہ مین شعرن سیتۍ برابر واٹھ کھیوان تہ آخری تخلص شعر چھنہ امہِ نغمہ کہ کلہم تاثر نِشہِ دور باسان تہ سوے چھیہ مہجورنی یا ونو شاعر سنزہنر مندی تہِ۔ آزاد چھ پانس آخرس پیٹھ دور کران تہ مہجورچھ پانس آخرس پیٹھ معشوقس سیتی جوڑتھ تس سیتی زندگی گزارنک آرزو کران۔ باسان چھ مہجور چھ اتھ تخلص شعرس منز تہِ شاعر روزان تہ آزاد چھ پنن اندرِم انسان پننِس شاعرس پیٹھ حاوی کران ےس بظاہر امہ نغمہ کِس کلہم مزازس مخالف باسان چھ تکیازِ شعرس منز گژھِ نہ شاعر سند عقید یا تسندسونچ حاوی گژھن ےس نغمہ کِس کلہم فضہس ددارو اتناوان چھُ:

یار گوژھکھ نہ دورنے

گوژھ نہ لدِتھ یہِ لورنے

سوز یہِ مہجورنے

روز پران پران ولو

                                                                                        (مہجور)

آزادو غرض مہ تھاو

اصل تہ عکس پرزناو

غور کرِتھ قدم ژ تراو

یور ڈراں ڈراں ولو

                                                                                   (آزادؔ)

پروفیسر غلام نبی فراقؔ چھِ مہجورنِس تہ آزاد سندِس اتھ وژنس متعلق کتھ کران  ونان زِ آزادن کور مہجورس تقلید تہ تمہِ سیتۍ ووت آزادس اکہِ طریقہ نقصان تہِ فراقؔ چھ ونان:

”مہجورسؔ مقابلہ یِم دوست تس نصیب سپدی تِم آسی سیاستدانی منز زیاد ایڈوانس تہ ادبی زاوجارکی واقف کار…… آزادن بوو مہجورس پنن کلامہ تہ سیتی کورن تمہِ اثرک یقرار ےس تِمو شعر و نِش ظاہر سپدان چھ ےِم تمی مہجورنین شعرن ہندس اثرس تل لیکھی حالانکہ امہِ سیت ووت تس فایدہ بدل نقصان۔ مثلن مہجورن ٹوٹھ تہ مہشور وژن اوس۔ ”باغِ نشاط کے گلو۔ ناز کران کران ولو“ تہآزادن کور امیک نقل یتھ پاٹھی۔ باغِ نسیم کے گلو۔ باشہِ کران کران ولو“  ۴؎

پروفیسر غلام نبی فراقؔ صاب چھنہ وضاحت کران زِ آزادس کیاہ نقصان ووت بلکہ چھ فقط ونان تس ووت فایدہ بدل نقصان۔ حالانکہ ہر گہہ ونو زِ آزادن کور مہجورن تقلید تہ واریاہ شاعر چھِ تقلید کران تہ خود مہجورن چھ رسول میرن تقلید کورمت۔ در اصل اوس مہجورن یہِ باتھ تہ امہِ قسمکی واریاہ باتھ عوامس منز کافی مقبول تہ گراما فون ریکاڑن ہندِ ذریعہ واتی گامہ گوم مہجورنی نغمہ تہ تتھ دورس منز اوس آزادؔ یس پیٹھ امیک اثر پیون لازمی اوس۔ مگر ےِمن دوشونی باتن ہنز یوسہ ہیرِکنہِ وضاحت سپز، تمہِ تلہ چھ ننان زِ آزادن چھ تقلید کرنہ وِزِ شعوری طور یہِ نغمہ مہجورس مقابلہ نوِ انداز لیوکھمت تہ بییہِ چھ آزادن باتھ مہجورنِس نغمس مقابلہ زیادہ خوبصورت۔

حوالہ

۱؎    کشمیری زبان اور شاعری۔ جلد ۳ صفہ نمبر ۱۹۔ ۰۹۲۔

۲؎    ایضاً………………………… صفہ نمبر ۱۹۲۔

۳؎    ایضاً………………………… صفہ نمبر ۳۹۲۔

۴؎    ”مہجور تہ آزاد اکھ مختصر جایزہ“ شیرازہ۔آزاد نمبر، صفہ۶۳۔ کلچرل اکیڈیمی

زمرے:تنقید

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s