تنقید

ہری کرشن کول تہ اختر محی الدین سندین دۅن افسانن ہند تقابلی مطالعہ


سجاد احمد گنائی

کاشرِ افسانہ کِس تواریخس منز چھہِ اختر محی الدین تہ ہری کرشن کول تِم زہ ناو یمو کاشرِ زبانۍ منز افسانہ صنف سنجیدگی سان ورتٲو تہ کاشرس افسانوی سفرس منز چھہِ یمن دۅن افسانہ نگارن پننۍ منفرد اہمیت تہ ینہ والین زمانن منز تہِ روزن یم نوین افسانہ نگارن ہندِ خاطرہ وتہ ہاوک سندِ حثیتہ گاشہ تارکن ہندۍ پاٹھۍ پرزلان۔ ہری کرشن کولن اگرچہ اختر محی الدینس پتہ ارداہہِ وہرۍ کاشرِ زبانۍ منز پنن افسانوی سفر شروع کۆر اماپوز پننہِ تخلیقی صلاحژ تہ نیرل اسلوبہ کِنۍ ہوو تمۍ کاشرس افسانس منز سہ کمال زِ کاشرس افسانس منز اگر اختر محی الدینس پتہ ونیک تام کانہہ بۆڈ افسانہ نگار چھہ سہ چھہ ہری کرشن کول۔

چونکہ یمن دۅن افسانہ نگارن ہندین دۅن افسانن درمیان منز آو میہ ہیوُے تھیم لبنہ تہ کاشرِ افسانکۍ زہ بڈۍ افسانہ نگار آسنہ سببہ کرہ بہ یہندین تمن دۅن افسانن ہند تقابل پیش۔ یم افسانہ چھہِ اختر محی الدین سند ’’گہے تاپھ گہے شہل‘‘ تہ ہری کرشن کول سند ’’بیان‘‘ افسانہ۔ میانۍ کوشش آسہِ یہندین یمن دۅن افسانن ہندِس متنس سام ہیتھے پتہ پننہِ پننہِ جایہِ تہند مۅل مشخص کرُن تہ تی چھہ جدید تنقید مطابق تہِ صحیح، تکیازِ کُنہِ تخلیقہِ تنقید کرنہ وِزِ پزِ اکِس نقادس تمام نظریہ، تعصب تہ تخلیقہِ ہند تخلیق کار اکتھ کُن ترٲوِتھ تخلیقہِ ہندس متنس پیٹھ پننۍ سۅ راے ظاہر کرنۍ یہ تمس سۅ تخلیق پٔرتھ وۅتلہِ۔

یمن دۅن افسانہ نگارن ہندۍ یم دۅشوے افسانہ چھہِ جدید دورکۍ پیداوار تہ تمی چھہِ ٹیکنکہِ حسابہ یمن منز کینہہ چیز ہیوی لبنہ یوان تہ بۆڈ چیز یس یمن منز ہیوُے لبنہ چھہ یوان سہ گۆو یہند تھیم۔ تہِ زن گۆو جدید دورس منز فرد سنز پرزنتھ راونۍ تہ کُنیر باگیہ یُن ۔ یہندین یمن مزکورہ افسانن منز چھہ جدید دورس منز ذہنی انتشارس منز ہینہ آمتِس انسان سند صورت حال افسانوی اندازس منز باونہ آمت۔اخترنِس افسانس منز چھہ یہ صورت حال رٲوی سندِ ژینن وطیرہ کِنۍ سطحس پیٹھ یوان تہ ہری کرشن کول سندس افسانس منز چھہ بیانیہ اندازس منز رٲوی سندِ دسۍ سطحس پیٹھ یوان۔ یہندین یمن دۅن افسانن ہند تھیم یس یم دۅشوے افسانہ نگار باونۍ یژھان چھہِ، چھہ رحمان راہی سند اَکھ شعر یاد پاوان تہ پزر چھہ زِ مزکورہ افسانن ہند تہ راہی سندِ شعرک تھیم چھہ میانۍ کِنۍ کُنے۔

منزۍ بازرۍ پۆک ژھۆپ صحراو

کس با گُدریو کمۍ سند حال

یم دۅشوے تخلیق کار کتھ حدس تام چھہِ پننہِ پننہِ آیہ یہ تھیم فنکارانہ اندازس باونس منز کامیاب گمتۍ؟ اختر محی الدین سندِ ’’گہے تاپھ گہے شہل‘‘ افسانک پلاٹ چھہ یتھہ کنۍ زِ اژونہِ سونتہ کین دۅہن منز چھہ افسانک واحد متکلم رٲوی اکہِ دۅہ کافی ہاوس کافی چینہِ اژان تہ کافی ہاوسس منز چھُس کُنہِ کُنہِ ٹیبلس پیٹھ اکھ اکھ زۆنا نظرِ گژھان ۔اماپوز اکِس ٹیبلس پیٹھ تریہ زنۍ بِہتھ تہ تہند پانہ وانۍ بحث چھہ رٲوی سند توجہ پانس کُن پھران۔ ٹیبلس پیٹھ بِہتھ ترین نفرن منز چھہ اکھ نفر ونان زِ انسان یہ کینژھا ونہِ تتھ پیٹھ گژھہِ ڈٹِتھ روزُن۔ دۆیم نفر چھہ گۅڈنکِس نفرہ سنزِ کتھہِ انکار کٔرِتھ ونان زِ یہ گیہِ سیاست، کانہہ کتھ چھیہ محض پروپیگنڈا خاطرہ وننہ یوان تہ مقصد پورہ گژھتھ چھہ تتھ کتھہِ انکار یوان کرنہ، زندگی ہند پریتھ کانہہ شعبہ چھہ سیاست بییہِ نہ کینہہ۔ یمو منزہ تریم نفر چھہ دۅن نفرن ہنزن راین یہ ؤنِتھ انکار کران زِ تُہۍ چھِو دۅشوے پرانہِ اندازہ سونچان۔ کانہہ کتھ چھیہ نہ پروپیگنڈا تہ نہَ چھہ ازکہِ زمانہ کُنہِ کتھہِ انکار سپدان بلکہ وۅنۍ چھہِ سارنے کتھن زہ معنی۔ تتھۍ زہ معنی یم اکھ اکۍ سندۍ ضد چھہِ۔ بییس ٹیبلس پیٹھ بِہتھ رٲوی چھہ پننۍ کِنۍ باس دوان زِ سہ چھہ پنین حارثاتن منز بڈیومت۔ مگر رٲوی چھہ تمنے کُن آسان سٔنِتھ۔ کافی ہاوسس منز اوس کُنہِ کُنہِ ٹیبلس پیٹھ اکھ اکھ نفرا کافی داما داما چیوان تہ کینہہ تام سونچان تہ ؤنۍ دوان زِ گژھہِ نا کانہہ زانۍ کارا پیدہ یُتھ تِم تہِ کتھا باتھا کرہن۔ رٲوی سندۍ کِنۍ ٲسۍ بحث کرن والۍ تریہ نفر امہِ ساتہ کافی ہاوسچ شوب تِم نے شور لاگہن کافی ہاوس باسہِ ہے قبر ہیو۔

سونتک موسم آسنہ کِنۍ اوس اتی تاپھ تہ اتی روٗد تہ وۅنۍ اوسن نیبرۍ کِنۍ روٗد لوگمت تہ کافی ہاوس اوس لوکو سیتۍ ژیستھ آمت۔ کافی ہاوسس منز اوس وۅنۍ شور۔ رٲویس دچھنۍ کھوورۍ ٹیبلن پیٹھ اڈۍ زورہ زورہ کریکہ دوان تہ زنانہ آسہ اسن کھنگالہ تراوان۔ ہُمن ترین نفرن ہندس بحثس اسۍ بییہِ زہ نفر شامل گمتۍ ۔ ٹیبلن پیٹھ بِہتھ بیۆن بیۆن ٹولہِ آسہ دربارس سیتۍ مس۔ اکس ٹیبلس پیٹھ مرد تہ زنہِ کتھ تام کتھہِ پیٹھ ٹھاہ ٹھاہ کٔرتھ اسان چھہِ۔ رٲوی چھہ سونچان زِ یم کتھ پیٹھ اسان، دپکھ میہ تہِ اسناوۍتو میہ گۆو واریاہ کال اسنسے۔ اتھۍ منز گیہِ رٲوی سندِس ٹیبلس پیٹھ اکھ جوان چھۅکھا بِہتھ یمن نہ رٲوی سندِ وجودک رژھ تہِ احساس چھہ۔ رٲوی چھہ پننۍ کِنۍ ژاس کران، زنگہ وایان تہ سگریٹ زالان تاکہ تمۍ سندس ٹیبلس پیٹھ بِہتھ جوان چھۅکہِ ہند ظۅن پھیرِہے رٲویس کُن۔ رٲوی چھہ اندری ونان زِ اگر یم میہ سیتۍ کتھ کرن بہ چاوہکھ کافی تہِ مگر تِم چھہِ نہ رٲویس کُن توجہ دوان۔ رٲویس چھہ پنن پان پرژھیۆن ہیو باسان تہ کافی ہاوسہ منزہ نیبر نیرتھ ژھری تہ چھنی سڑکہِ پیٹھ کُنے زۆن قدم دوان۔

ہری کرشن کول سندِ ’’بیان‘‘ افسانک پلاٹ چھہ فلیش بیکس منز پُلسس برونہہ کَنہِ رٲوی سندِ بیانہ دسۍ ظاہر سپدان۔ رٲویس چھیہ اکس نوجوان سندس قتل سپدنہ کِس واقعس متعلق پرژھگٲر یوان کرنہ تکیازِ یمس نوجوان سند قتل چھہ یوان کرنہ سہ چھہ اکہِ دۅہ اتفاقا سڑکہِ پیٹھ رٲویس برونہہ برونہہ پکان آسان۔ رٲوی چھہ پنن بیان شروع کران تہ ونان زِ دۅہدش صبحس ڈیوٹی نیرنہ وِزِ تہ کوچہ منز نیرِتھ چھہ میہ بجہ سڑکہِ پیٹھ وٲتِتھ اتفاقا کانہہ نتہ کانہہ سمکھانے تہ سہ نیوٗل کوٹھہ وول تہِ سمکھیوو میہ تمہِ دۅہ اتفاقا نتہ ٲس نہ میہ تمِس سیتۍ کانہہ زان پہچان۔ بیان جاری تھٲوِتھ چھہ رٲوی ونان زِ سڑکہِ پکان پکان زنتہ لج تِمن پکنس مان مان۔ رٲویس ییلہ نیوٗل کوٹھہ والۍ سندس خدو خالس متعلق پرژھنہ چھہ یوان یعنی شکلہِ کیُتھ اوس ،تالہِ اوس سا مس بیترِ یتھ در جواب سہ چھکھ ونان زِ میہ چھیہ نہ پے زِ تس اوسا تالہِ مس یا تمِس ٲسا تال تہِ کِنہ نہَ، میہ چھیہ صرف یژے یٲژ پے زِ میہ برونہہ برونہہ اوس اکھ نیوٗل کوٹھہ وول پکان یُس بہ پانس پتھ تراونچ کوشش اوسس کران۔ یہ سلسلہ چھہ کینژن میلن تام جاری روزان۔ وتہِ کدلس پیٹھ چھیہ نیلِس کوٹھہ وٲلِس اکھ کوٗر سمکھان تہ دربارس کُن لگان تہ اتھۍ منز چھہ رٲوی نیلِس کوٹھہ وٲلِس پانس پتھ تراوان۔ کینہہ قدم برونہہ پکِٔتھ چھیہ رٲویس گاڈِ ہندِ ہکہ بریک لگنچ آواز کنن گژھان مگر دفتر ژیر گژھنہ کِنۍ چھہ نہ رٲوی پتھ کُن وچھان۔ یہ ؤنِتھ چھہ رٲوی پرژھ گٲر کرن والین ونان زِ میہ بوٗز پتہ واریہہ کالۍ تہ وۅنۍ چھس تۅہہِ نِشہ تہِ بوزان زِ تمہِ دۅہ اوس میہ پتہ کنہِ سہ نیوٖل کوٹھہ وول قتل آمت کرنہ۔ رٲوی چھہ یہ سورے ؤنتھ پننۍ صفایی پیش کران۔

یہ آو گۅڈے وننہ زِ یہندین مذکورہ افسانن ہند تھیم چھہ فرد سنز پرزنتھ راونۍ تہ کُنیر باگہِ یُن تہ یہ تھیم سطحس پیٹھ اننہ خاطرہ چھہِ دۅشوے افسانہ نگار پننۍ پننۍ تخلیقی ول کامہِ لاگان۔ اختر محی الدین سندِ ’’ گہے تاپھ گہے شہل‘‘ افسانک صورتِ حال چھہ کافی ہاوسس منز لوکن ہند بحث تہ رویہ تہ ردعملس منز رٲوی سند ژیترُن رٲوی سندۍ دسۍ سطحس پیٹھ یوان۔ ییلہ کہِ زن کول سندس ’’بیان‘‘ افسانس منز سورے صورتِ حال رٲوی سندے چھہ تہ رٲوی سنزِ زبانۍ منزے چھہِ اسۍ سہ سورے بوزان۔ وچھووے تہ تیلہ چھیہ نہ ہری کرشن کول سندس افسانس منز رٲوی سندِ بیانہ لحاظہ شک کرنچ کانہہ گنجایش۔

وۅں گۆو اکھ کتھ چھیہ ثیقہ زِ اخترنِس مذکورہ افسانس مقابلہ چھہ کول سند ’’بیان‘‘ افسانہ ہنا وضاحتی۔ افسانہ کِس فنس متعلق چھیہ اکھ حقیقت یہ زِ افسانچ زبان چھیہ آسان اشارتی تہ افسانس منز کُنہِ کتھہِ پتہ کنہِ دلیل پیش کرنۍ چھہ افسانک عیب ماننہ یوان۔ تہِ زن گۆو ییلہ رٲوی بیانس دوران قاتلس متعلق کانہہ پتاہ نہَ آسنس پیٹھ ونان چھکھ زِ لۅکچارس اوس میہ سورے یاد روزان۔ بہ یتھ وتہِ پکہ ہا تمن وتن ہنزن دچھِنۍ کھوورۍ لرین ہنزن ڈبین پیٹھ کُس نفر کیاہ اوس کران تہِ سورے اوس میہ یاد روزان، کتھ ویرِ کر دراے بامن سۅ تہِ ٲس میہ خبر آسان بیترِ بیترِ۔

نہ جناب بہ اوسس نہ دۅہے یُتھے۔ لۅکچارس منز یپارۍ یپارۍ بہ پکہ ہا میہ اوس پوٗر وۆن روزان زِ کتیتھ کۅس لٔر چھیہ۔ کتھ لرِ کِژھ ڈب چھیہ؟ کِژھہِ ڈبہِ پیٹھ کُس نفر کیاہ چھہ آسان کران؟ میہ جناب اوس یہ تہِ پے آسان زِ سونتس منز کتھ ویرِ کر درایہِ بامن۔ ریتہ کالہِ کوتاہ پھرسہم پھمب سمیوو آنگنن منز تہ وارین منز۔ ہردس منز کۅسہ بوٗنۍ وۅشلییہ تہ کتھ پھیر ذردی۔ وندس منز نیتھہ نٔنس کِکر کُلِس پیٹھ کمہِ وِزِ کوتاہ بۆڈ کاو یینہِ وول بیوٗٹھ سبہِ۔ (بیان افسانہ)

ادبک اَکھ بۆڈ بارہ خاصہ چھہ یہ زِ یہ چھہ نہ کُنہِ مسلس، حقیقژ یا چیزس متعلق پننۍ راے یا کانہہ سٹیٹمنٹ پیش کران بلکہ کُنہِ مسلس، حقیقژ یا چیزس تخیل کِس جامس منز ؤلِتھ ورگہ اندازس منز پیش کران تہ تمہِ منزہ کانہہ نتیجہ یا نصیحت اخذ کرنۍ چھیہقاری سنز کام۔ مطلب زِ تخلیق کار گژھہِ نہ قاری یس اتھس تھپھ کٔرِتھ ہاوُن زِ میہ چھہ یہ ہُہ چیز ونُن بلکہ گژھہِ تخلیق کار استعارن، تشبیہن، علامژن بیترِ کٲم ہیون تہ ییلہ اسۍ افسانس متعلق کَتھ کرو اتھ منز گژھہِ تخلیق کار ایمایی زبانۍ کٲم ہیۆن تہ بدل لفظن منز ونو زِ افسانس منز گژھہِ اختصار آسُن۔ اگرچہ ہری کرشن کولس اتھ افسانس منز میانۍ کِنۍ پیٹھ کنہِ ذکر کرنہ آمت تھیم وۅتلاوُن ضروری اوس نہ زِ تتھ ڈۆکھ کرنہ خاطرہ یا قاری یس فکرِ تارنہ خاطرہ ٲس تمس دلیل پیش کرنۍ۔ باسان چھہ زِ ہری کرشن کول چھہ راے زیادہ تہ افسانہ کم پیش کران۔ یعنی زنتہِ چھہ افسانہ نگار قاری یس فکرِ تاران زِ زہ تہ زہ گیہِ ژور۔

خبر جناب یمنے داہن بہن ورین منز کیاہ سپد یہ۔ یتھ لۅکٹس شہرس منز ییتہِ پریتھ کانہہ پریتھ کانسہِ زانہِ ہے، چھہ وۅنۍ پریتھ اکھا پریتھ اکۍ سندِ باپتھ وۅپر بنیومت۔ یم خۅش قسمت یینہِ وٲلس منز شامل ٲستھ مہرازس پتہ پتہ بانگڑا تہ ٹوسٹ چھہِ کران یا بد قسمت یم کُنہِ جنازس منزشامل ٲستھ مۅردس پتہ پتہ کلہ ٹھاسان تہ ہژۍ ژاپان چھہِ، تم تہِ چھہِ اکھ اکس نِش وۅپر تہ انزان آسان۔ یوٗتے یوت نہ یمو نفرو اوتر شہرس منز فساد تل۔ بسن تہ کارن نار دیت۔ مکانن تہ دکانن لوٗٹھ کۆر۔ تمو منزہ تہِ آسہِ ہے پریتھ کانہہ شخص پننہِ پننہِ جایہ کُن زۆن تہ پرژھیۆن۔ (بیان افسانہ)

’’بیان ‘‘ افسانہ کِس ابتداہس تہ اختتامس منز چھہ افسانہ نگار تمہِ کتھہِ ہنز ذکر کران یعنی ییلہ سہ پُلسہ والین ونان چھہ’’بہ ونہ یتھے پاٹھۍ زِ پزر چھہ اولادس ہٖیو آسان۔ اولادس ہیکوتۆتام اولاد ؤنتھ یۆتام سہ پننے روزِ۔ ییلہ سہ پننیو اتھو منز نیرِتھ بییہ کانسہِ ہند بنہِ تیلہ کتہِ ہیکو تس اولاد ؤنتھ‘‘ یُس نہ بنیادی تھیمس کانہہ شدت بخشان چھہ بلکہ چھہ بنیادی تھیمس ددارہ واتناوان تہ رٲوی سنز دلچسپی منز خلل پیدہ کران۔ وۅنۍ اگر افسانہ نگارس اتھ افسانس منز جدید دورس منز اولادن ہند بتھۍ پھیر گژھن ہاوُن چھہ یا اولاد بتھۍ پھیر گژھتھ چھہ نہ سہ مالۍ سنز ملکیت روزان ہاوُن چھہ تہ اوہ کِنۍ پزِ ہے نہ تمس کورِ ہندس مٲلس سہ نیوٗل کوٹھ وول قتل کرُن تکیازِ سۅ کوٗر ٲس نہ وۅنۍ مالۍ سنز ملکیت روٗزمژ۔ تیلہِ پزِہے نہ افسانہ نگارس تتھ تھیمس زایُن دیُن یمچ ذکر گۅڈے کرنہ آے۔

اتھ برعکس چھہ اختر محی الدین ’’ گہے تاپھ گہے شہل‘‘ افسانس منز اختصارس کٲم ہیوان۔ وۅنۍ گۆو اختر نِس مذکورہ افسانس منز تہِ چھیہکینہہ خامی یہ یم افسانہ کِس بنیادی تھیمس ددارہ چھیہ واتناوان۔ افسانہ نگار چھہ افسانس منز تِمن کتھن تہ مسلن شامل کران یمن نہ افسانہ کِس تھیمس سیتۍ کانہہ واٹھ چھہ۔ افسانہ کِس فنس متعلق چھیہبیاکھ کتھ یہ زِ افسانس منز گژھہِ نہ افسانہ نگار کانہہ سہ عنصر داخل کرُن یتھ نہ افسانہ چہِ بنیادی کتھہِ سیتۍ کانہہ واٹھ آسہِ۔ یعنی افسانک اکھ اکھ لفظ گژھہِ بنیادی نقطس اندۍ اندۍ نژُن تہ تھیمس شدت بخشُن۔ افسانہ کِس ابتداہس منز یُس بحث ترین نفرن درمیان سپدان چھہ سہ چھہ یمہِ کِنۍ افسانہ کِس بنیادی تھیمس سیتۍ واٹھ تھاوان تکیازِ امہِ ذریعہ چھہ افسانہ نگار علامتی ادبس کُن اشارہ کران یمہِ ذریعہ سہ قاری یس ورگہ پاٹھۍ ژینہ وَن دوان چھہ۔ وۅنۍ گۆو بۅنہ کنہِ دنہ آمژ عبارژ چھہ نہ افسانہ کِس تھیمس سیتۍ کانہہ واٹھ لبنہ یوان۔

"کافی ہنز تلخی ٲس میانین شرۅکیمتین نٲرن دنن دِتھ زنتہ بیدار کران۔ کافی دامس پیٹھے سگریٹُک دام اوس تلخی ہُرراوان تہ تلخی کٲژاہ خۅش ٲس میہ کران ۔۔۔ انسانن چھیہ قدرت کِس گریبانس تھپھ ژھنۍ مژ۔ دلاوری تہ تگنگری چھیہ برونٹھ پکناونچ ضامن مگر میانہِ رگہ چھیہ شرۅکیمژہ۔ حرکت چھیہ باندِ گامژ۔ روٗسی شُنۍ سوارن چھہ تھہہ پان لویمت، دلاوری ہند معراج، قدرت کہِ سۅدرہ منزہ لال کھالن وول ڈنگُل۔ ژھۆکِتھ تہِ زوتان، ناپان تہ وتہ پدۍ پرزلاوان۔”

دۅشونی افسانہ نگارن ہندین افسانن ہندِس تھیمس یۅس مختصر عبارت سطحس پیٹھ انان چھیہسۅ کرہ بہ بۅنہ کنہِ پیش تہ پزر چھہ یہ زِ اگر یہندِۍ یم افسانہ بۅنہ کنہِ دِنہ آمژن عبارژن پیٹھے مشتمل آسہ ہَن یم آسہن جان افسانہ۔ وۅنۍ گۆو میانۍ کِنۍ چھہ یتھ تقابلس منز ہری کرشن کولس مقابلہ ا ختر محی الدین سند پوتُر گۆبے پہن لبنہ یوان۔ سہ گۆو اختر سند ہری کرشن کولس مقابلہ مذکورہ افسانس منز اختصارس ۔۔۔۔

مگر تہِ کٔرتھ تہِ ہیکہ نہ بہ ؤنتھ زِ تس اوسا تالہِ مس گۆلمت کِنہ نہ۔ دراصل آسہ تسندِ بدلہ میہ برونہہ برونہہ نیجہِ پتلون زنگہ جوراہ پکان۔ یمہِ کِنۍ تِمن سیتۍ سیتۍ تمی رنگہ چہِ کوٹھہ نرِ جوراہ تہِ آسہ حرکت کران۔ تسنزہ لانپہ مینان مینان آسہ منزۍ منزۍ میانہِ نظرہ تسندِس کرہنِس بوٗٹس کُن تہِ پیوان جناب ونُن چھم یہ زِ میہ نِش اوس سہ صرف نیوٗل کوٹھ پتلوٗن تہ کرہُن بوٗٹھ تہ بییہِ نہ کینہہ۔ توہۍ چھِو پرژھان تالہِ اوسسہ مس کِنہ نہ۔ بہ ہیکہ یہ تہِ ؤنتھ زِ تس ٲسا تال کِنہ نہ۔ نیلِس کوٹھہ کالرس پیٹھ کنہِ ٲس سا کلہ ہیر تہِ کِنہ کِہنی نہ۔ (بیان افسانہ)

میانِس ٹیبلس پیٹھ ٲس جوانہ چھۅکھاہ اکھ یم ٲسۍ اورہ یوانے کتھن سیتۍ مست۔ گرا اسان، گراکھ اکِس دکہ دِوان۔ یم بیٹھۍ لاپرواہ پاٹھۍ کرسی ین پیٹھ۔ میانہِ وۅجودک نہ اکھ رژھ تہِ احساس۔ میہ باسیوو بہ گوس لتہ مۅنجہِ ہیو۔ بہ اوسس پننۍ کِنۍ ژاس کران، سگریٹ زالان، زنگہ وایان زِ یم وُچھن نا میہ کُن۔ بہ کرہکھ یورے سلام۔ سگریٹ چاوہکھ۔ ظاہر چاوہکھ کافی تہِ۔ صرف پرژھہکھ زِ تہۍ کتھ پیٹھ چھِو اسان۔ میہ تہِ اسناوۍ تو میہ گۆو واریاہ کال اسنس۔ مگر یمو دیت نہ میہ کُن کانہہ توجہ۔ یمو لاپروایو، یمو ظالمو۔ بہ وۆتھس ٹیبلو منزۍ منزۍ دراس تہ وۅتس سڑکہِ پیٹھ۔ سڑک ٲس چھنی۔ روٗد اوس پیوان۔ بہ اوسس کُنے زۆن وتہِ پکان ۔ (گہے تاپھ گہے شُہل )

کلہم پاٹھۍ ہیکو ؤنتھ زِ دۅشوے افسانہ نگار یُس تھیم سطحس پیٹھ انُن چھہِ یژھان یا یہ باوُن چھہِ یژھان تتھ چھہِ نہ یہندۍ یم افسانہ پورہ پاٹھۍ اتھہ رۆٹ کران تہ اتھ چھہ نہ کانہہ شک زِ قاری یس تام چھہِ یم سہ تھیم وا تنٲوِتھ ہیکان اماپوز سۅ شدت ہیتھ نہ یمکۍ تقاضہ یہندۍ تھیم کران چھہِ۔

سجاد احمد گنایی چھہِ کشمیر یونیورسٹی ہندس کاشرس شعبس منز ریسرچ کران۔

زمرے:تنقید

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s