Uncategorized

اصطلاح کیا گۆو؟


ساحل عباس میر
’’اصطلاح‘‘ لفظک لغوی معنی چھ باہم صلح کرن۔ بعضے چھ یہِ پانہ وانۍ متفق سپدنکِس مجازی معنی یس منز استعمال کرنہ یِوان۔ وۅنۍ گۆو علمی ورتاوس منز چھ اصطلاح اکھ بدوٗنہ معنی تھاوان۔یس ناوت کِس رنگس منز استعمال سپدان چھ۔ ج۔ ع۔ واحد ن چھ اصطلاحچ وضاحت ییمہِ آیہِ کرمژ:
’’اصطلاح کا مادہ ’’مصلح‘‘ ہے۔ اس کے لغوی معنی باہم صلح کرنے کے ہیں۔ مراد’ کسی قوم،فرقہ، جماعت یا پیشہ کا کسی لفظ کے معنی موضوع کے علاوہ یا اس سے ملتے جلتی مقرر کر لینا ‘ یعنی ’’ اصطلاح وہ ایک نئے معنی موضوع ہیں جو ایک لفظ یا چند لفظون کو متعد آدمی باہم اپنے کسی خاص اظہار کے لیے پہناتے ہیں اور وہ ہی لوگ بولتے اور سمجھتے ہیں۔‘‘۱؂
انسانی تہذیبس منز چھِ ’’اصطلاح ‘‘ تیتیاہ قدیم ییژاہ قدیم انسانہ سنز علمی تہ ادبی سرگرمیہِ چھے۔دنیہس منز چھِ انسان تہ انسانی زندگی ہندین مختلف گوشن متعلق مختلف علوٗم برۅنہہ کن آمتۍ۔یِمن علومن ہندِ دسۍ چھِ آدمۍ تہذیب کہِ پتھ کالہ پیٹھے مختلف تصورات بارسس آمتۍ۔ یِمن تصوراتن ہندِ ترسیلہ باپتھ چھِ وقتہ وقتہ مختلف لفظ مقررکرنہ آمتۍ۔یِمن ہند ورتاو علمی مجلسن ،مباحثن ،مطالعس یا درس وتدریسس منز سپدان روٗد مت چھ۔یتھ لفظ سرمایہِ چھ پرتھ علمی شعبس سیتۍ وابستہ۔یِمن تمہِ علمی شعبکۍ کلیدی لفظ تہِ ونِتھ ہیکو۔یِمے لفظ چھِ تتھ علمی شعبس سیتۍ وابستہ اصطلاحی لفظ۔ ییتین ہیکہِ یہِ فی تہِ پیتھ زِ اصطلاح چھ تی یہِ ’’نشانہ ‘‘ یا ’’ علامت‘‘ آسان چھ۔تِکیازِ ’’نشانہ‘‘ یا ’’علامت‘‘ کِس معنی یس یا توثرس منز تہِ چھ باہم متفق آسن ضروٗری۔ مگر یہِ چھ نہ صحی۔ حالانکہِ وچھوہے تہ مدا مقصد لحاظ باسہِ یِمن منز ہِشر۔تِکیازِ علامت لفظس چھ معنی نِشانہ ، ٹوکن ،ژینہ ون دِنہ وول کانہہ چیز یا یاد پاون وول کانہہ ذریعہ۔ دراصل چھ ’’ علامت‘‘ تلہ یہِ مراد سہ کانہہ چیز یا نشانہ بیترِ یس کانہہ خیال، کانہہ تصور، کانہہ ذیہنی یا نفسیاتی یا روٗحانی حال یا کیفیت، کانہہ کتھ یا خصوٗصیت کنہِ تہِ مخصوٗص چیزیا طریقہ ژیتس پاوِ یا تمِچ نمایندگی یا ترجمانی کرِ۔مثالے سڑکن پیٹھ چھِ ہاونہ یِنہ وٲلۍ مختلف ٹریفک نشانہ آسان۔یا بِجلی ٹرانس فارمرن پیٹھ چھ خطرک ہاونہ باپتھ کلہ کھۅپر بنٲوِتھ آسان یا ریاضی تہ حساب کِس علمس منز چھِ مختلف نشانہ ا ستعما ل سپدان۔ وۅنۍ گۆو وچھوہے تہ یِمن نشانن تہ اصطلاحن چھے پانہ وٲنۍ ز اہم فرقہ۔اول یہِ زِ یِم نشانہ یا علامژ ہیکن تصویرن منز ٲسِتھ۔ اماپۆز اصطلاح چھ ہر حالتس منز لفظ نہ زِ تصویر۔دۆیِم یہِ زِ پیٹھ کنہِ یِمن علامژن تہ نشانن ہنز کتھ کرنہ آیہِ تِم چھے عوام الناسس تام کانہہ زانکاری یا خیال واتناونہ باپتھ استعمال کرنہ یِوان ۔خاص پٲٹھۍ تِمن ہندِ باپتھ یِم نہ پرِتھ لیکھِتھ ہیکان چھِ۔اتھ برعکس چھِ اصطلاح مخصوٗص پٲٹھۍ زیاد ظۅنہ وٲلۍ، زٲنۍ کار تہ پرۍ مِتہِ لیکھۍ متہِ طبقہ باپتھے۔ بلکہِ نہ صرف پۆرمت لیوٗکھمت طبقہ بلکہِ گژھِ سہ تمہ مضموٗنک عالِم یا طالب علم آسن یتھ سیتۍ کانہہ اصطلاح وابستہ آسہ ۔تہ امچہِ زانکاری باپتھ چھنہ محض پۆرمت لیوٗکھمت آسن کافی۔اصطلاح چھ ادبی علامت نِش تہِ مختلف۔ادبی علامت چھے ز چیزپانہ وٲنۍرلاوان۔یا ونو دۆن چیزن میل کران۔ اکھ گۆو کانہہ ذہنی تصور یتھ انگریزۍ ادبی نقاد اِمیج ونان چھِ تہ کٲشرۍ پٲٹھۍ چھِس شبیہہ یا پیکر ونان۔تہ دۆیِم گۆو کانہہ تہِ سہ خیال ، تصور، خصوٗصیت ،حال یا کتھ یتھ کن یہِ پیکر یا شبیہہ ظۅن پاوان چھے۔یا ونو یہِ تہِ زِ یس خیال یا تصور امہ شبیہہ یا پیکر دسۍ سٲنِس ذہنس منز وۅتلان چھ۔اکہ طریقہ چھِ اصطلاح لفظس تہِ ز پکھۍ۔ اول بحثیت اصطلاح کہِ لفظچ طبعی صوٗرت تہ دۆیِم سہ مجردخیال ییمِچ یہِ اصطلاح ترجمانی کران آسہِ۔ مگر تمہ باوجوٗد چھ نہ علامت لفظ تی یہِ اصطلاح معنی تھاوان چھ۔ اصطلاحس چھ اکھ مخصوٗص معنی۔کنہ تہِ علمی شعبکِس اصطلاحس چھِ اکھ سر کھر معنی تہ امہِ اصطلاح ہچ ذکر ییمہ ساتہ تہِ وۅتھِ سۅ کتھ وۅتھِ امہ کِس مخصوٗص معنوی دٲیرس اندۍ اندۍ۔اتھ برعکس چھِ ادبی علامتس معنی ین ہندۍ تہہ کھسان۔بعضے ہیکہِ کنہ ادبی علامژ فردن ہندِ باپتھ تاثیر تہ توثر وکھر وکھر ٲسِتھ۔ مگر کنہ تہِ اصطلاحس متعلق امہ آیہِ سوچن چھ غلط۔اصطلاح تہِ ہیکہِ بعضے کثیرالمعنی ٲسِتھ مگر یِم معنی تہِ آسن مقرر حدن منز۔اصطلاحس ہیکن مختلف وضاحژ ٲسِتھ۔تہ پرتھ کانہہ وضاحت آسہِ پننہِ پننہِ جایہِ صحیح۔مثلاً ’’ رومانیت‘‘ چھے اکھ ادبی شعبچ اصطلاح ۔ عالمی ادبی تنقیدس منز چھ نہ رومانی مزازس کانہہ حدبندپہچا ن تہ رومانیت بحثیت ادبی اصطلاح چھے پانہ اکھ متضاد وضاحتن ہنز حامِل۔یتھ منز بعضے جذبس تہ اظہارِ بیان چہِ آزادی پیٹھ زور دِنہ آمت چھ تہ بعضے فِکری سۆتھرس پیٹھ حقیقت نِش فرارس پیٹھ زور دِنہ آمت چھ۔دنیاکین مختلف زبانن تہ خاص پٲٹھۍ یوٗرپی زبانن منز چھے یہِ بحثیت نہج زمانہ مکانس منز تہِ قاد بند کرنہ آمژ۔ یتھ مختلف وضاحژ دِنہ یِوان چھے۔ مگر کثیرالوضاحتی آسنہ باوجوٗد چھے یِم مختلف وضاحژامہ اصطلاحچہِ مختلف پرزناون انہار یا خصوٗصیژ۔یِم خصوٗصیژ چھے نہ اتھ مبہم بناوان بلکہِ چھِ اتھ اصطلاحس مزید ویژھنے کران۔اصطلاحچ خوٗبی چھے یہِ زِ اتھ منز گژھِ ابہام ناپید آسن۔
عصری زبٲنۍ محاورس منز ہرگاہ کتھ کرو ’’ اصطلاح‘‘ مٲنۍ تو چھِ تی یہِ زانکاری سۆمبرِتھ تھاونہ باپتھ کمپیوٗٹرس منز فولڈر بنٲوِتھ تھاونس آسان چھے۔گۆو زِ اتھ منز چھے کنہ تصورس یا خیالس متعلق زانکاری تہ خیال سوٗمبرِتھ روزان۔یِم مٲنۍ تو چھِ اشار تہ یتھے اسۍ کانہہ اصطلاح بوزان چھِ سون توجہ چھ فِلفور تتھ خیالس کن منتقل سپدان یتھ کن یہِ اصطلاح اشار کران چھ۔
سوال چھ اصطلاح سازی ہنز ضروٗرت کیازِ چھے ؟یا ونو یہِ زِ اصطلاحن ہند مقصد تہ مدعا کیا چھ۔دراصل چھِنہ اصطلاح بے مقصد تہ بے مدعا۔یِمن ہنز پیٹھے بانہ اہمیت چھے یہِ زِ یِم چھِ مختلف علوٗمن باہم زمر بندی کرنک اکھ وسیلہ۔ اصطلاح چھ مختلف پریتھ علمی شعبس پنن اکھ رنگ تہِ بخشان۔تہ پنن اکھ امتیازپاد کران تِکیازِ پرتھ علمی شعبس چھِ پننۍ پننۍ اصطلاح۔تتھ علمی شعبس انزۍ منزۍ گژھن گۆو تتھ سیتۍ وابستہ اصطلاحن ہنز زان آسنۍ۔اسۍ ہیکو بعضے اصطلاح بوٗزۍ تھے یہِ انداز لگٲوِتھ زِ کتھ کمہ علمی شعبچ چھے چلان۔
اصطلاحن ہند بیاکھ اکھ اہم مقصد چھ زبٲنۍ منز اختصار پاد کرن۔چناچہِ زبٲنۍ ہنز فطری خصوٗصیت چھے اختصار ۔تہ انسانہ سنز کوٗشش چھے پرتھ ساتہ یی روزان زِ پنن خیال کرہے سہ ٹھوس تہ مۅخصرپٲٹھۍ پیش۔یتھین موقعن پیٹھ چھِ اصطلاح درکار یِوان۔تمی چھ علمی شعبن ہنزِ زبٲنۍ منز یہِ اختصار وۅتلاونہ باپتھ اصطلاح سازی سپدان ۔ہرگاہ کنہِ علمی شعبس منز اصطلاحن ہنز عدم موجودگی آسہِ تمہِ ساتہ چھ کانہہ خیال ژیتس تھاونہ باپتھ یا پھرنہ باپتھ لفظ طوالتس کٲم ہینۍ پیوان۔مثلاً مٲنۍ تو ‘‘استعار ‘‘ ہِش ادبی علامت آسہِ ہی نہ ۔ تہ ییلہِ اسہِ کانہہ کٲنسہِ شاعر سنز شاعری مۅلناونہ وِزِ تسنزِ زبانۍ ہنز استعار سازی ہنز خوٗبی ویژھناونۍ آسہِ ہے۔اسہِ پیہ ہن جملن ہندۍ جملہ بیان کرنۍ۔مگر استعار ہیوٗ اصطلاح چھ اسہِ امہِ طوٗل بیانی نِش بچاوان۔
ییمہ کتھ نِش تہِ ہیکو نہ انکار کرِتھ زِ ’اصطلاح ‘‘ چھِ اکھ سہولیت۔یہِ سہولیت چھے خیالن تہ تصورن ہندس ابلاغ ترسیلس آسان بناوان ۔یِموورٲے چھ ممکن زِ علمک یہِ ابلاغ ترسیل بنہِ مبہم تہِ تہ زیاد میحنتک طلبگار تہِ۔ اصطلاح چھِ اسہ علمی شعبن منز کنہ مضموٗنس متعلق زانکاری منظم طریقس پیٹھ فراہم کران۔منظم طریقس پیٹھ فراہم آسنہ کِنی چھِ کانہہ علم نہ صرف رژھراون آسان بلکہِ چھ ہیکان اکہِ پیہِ پیٹھ دۆیمہ پیہ تام منتقل تہِ آسانی سان کرنہ یِتھ۔امہ لحاظ چھِ ’’اصطلاح‘‘ اکھ ولت یتھ منز تصور تہ خیال محفوٗظ روزان چھِ۔وچھوہے تہ پتھ کالکین مختلف بلند پایہِ تہذیبن ہندعلِم چھ اصطلاحن ہندی مدتہ پیرۍ درپیرۍتام وٲتِتھ ہیۆکمت۔افلاطوٗن تہ ارسطوٗ سندۍ واریا فلسفی تہ علمی نۅکتہ چھ، اصطلاحن منز ے رژھراونہ یِتھ موجوٗد زمانس تام وٲتۍ مِتۍ۔
اصطلاح چھِ کنہِ تہِ علمس اکھ اۅبیرگۅبیر تہ سنجیدگی کیو سنیرعطا کران۔ عام بول چال زبانۍ منز چھ معنی یک تہ توثرک ڈیجر یا تنیر آسان ییلہِ زن اصطلاح معنی تہ خیال منجمد صوٗرتس منز برۅنہہ کن انان چھِ۔ییمہ سیتۍ علمی زبانۍ منز معنی یک گۅبیر پاد سپدان چھ۔چناچہِ اکثرچھ یہِ ماننہ آمت زِ عام زبان تہ علمی زبان گژھِ اکھ اکِس نِش بِدوٗن آسنۍ۔عام زبانۍ نِش علمی زبانۍ منز بینیر پاد کرنس منز چھ یِمنے اصطلاحن ہنددخل۔
امی شکلہِ ہند بیاکھ پہلو چھ یہِ زِ زانۍ ہندِس پریتھ شعبس منز چھِ اصطلاح مانیِچ قطعیت (exactness) فراہم کران۔ امیک دلچسپ پہلو چھ یہِ زِ یہِ کینژھا وضاحت زیچھِ عبارژ منز کرِتھ اصل معنیس ژھاے روزان چھے تی ییلہِ اصطلاح چہِ صوٗرژ منز بیان سپدِوَنن وول تہِ چھ باوتھ کرِتھ لۅتان تہ بوزن وول تہِ چھ عملہِ تہ فعلس منز پوٗر پوٗر آگاہی پراوان۔یۆہے چھ وجہ زِ مختلف شعبن ہندین کامہِ کارن سیتۍ وابستہ چھۅکن قبیٖلہ کین لوٗکن چھِ پننۍ پننۍ اصطلاح آسان۔ عامیانہ سطحس پیٹھ چھے اصطلاح تہ پھر کتھ اکۍسے زمرس منز تھاونہ یوان مگرسۅ چھَنہ حقیٖقت۔ سانہِ سمجھنہ خاطر ہیکہِ یہِ مثال سیٹھہے فایدم مند ثابت سپدِتھ۔ کشیر منز چھِ اَتھ کامین ہندین بیون بیون کارن سیتۍ واریاہ لوٗکھ وابستہ۔ اگر اسۍ شالبافن، قالین بافن ، گرٹہ والین، نمد گرین، ٹوپہِ گرۍ کار والین، تۅرکہ چھانن، ووورین، وازن کانہِ لین، داندرین، تِلہ دوٗزن،چھانن، دسلن، کھارن، پہلین، کۆملین ہنزن تہ تِہندین کارن سیتۍ وابستہ کتھِ باتھ سام ہیمو۔ یہ کتھ سپدِ واضح زِتم تہِ چھِ مختلف چیزن متعلق اصطلاحن ورتاوان۔ یمو کِنۍ تِہند واتناویر موثر چھ بنان۔ اصطلاح سازی ہنز عمل چھے برابر تِژھے یژھ زبان سازی ہنز عمل چھے تہ اَتھ عملہِ منزچھ تِہند دِیت زیاد آسان یِمن پننہِ شعبچ زیاد سنۍ زان آسہِ۔ توے تہِ ییلہِ کٲشر ڈرایورتہ کنڈکٹراکِس خاص لۅکچہِ پایپہِ کبابہ گنڈ چھ ونان۔یہِ لفظ چھ اصطلاح بنِتھ زیاد بہتر پاٹھۍ اکِس چیٖزس بیان کران۔ سژنۍ کٲم کرن وول چھ گاڈ کۆنڈ تحریر جالہِ دار وغار ہوِۍ لفظ ورتٲوِتھ سۅے عمل ورتاوان یہِ ادبک طالبِ علم ردیٖف، قافیہِ، مطلع، مقطع ، غزل، تخلص ، تشبیہہ، استعار وغار ونِتھ ورتاوس چھ انان۔ دلچسپ کتھ چھے یہِ زِ ادیٖب تہ قلم کار ییتہِ اصطلاح سازی منز زیاد محتاط آسن گژھِ تَتہِ چھِ کینہہ اندرٹۍ اتھ منز تھۅس انان۔ ٹیلی وِجن تہ ریڈیو خاطر ورتاوۍ اسہِ دوٗردرشن تہ آکاشوانی ہوِۍ خاص اصطلاح مگر یِم ہیکۍ نہ تِمن اصطلاحن ہندۍ مترادِف بنِتھ یہِ انگریزۍ اصطلاح باوان چھِ بلکہِ سپدۍ یم اصطلاح مقامی حدبندی منز قادو بند تہ یتھ کنۍ گۅو دوٗردرشن تہ آکاشوانی محض تہ محض عوامی پرژارکین دۆن ہندوستانی ادارن ستیی وابستہ۔ مو تی لال ساقی چھ اصطلاح کِس معنیس متعلق لیکھان:
’’ سہ لفظ یا جملہ چھ اصطلاح بنان یتھ کنہِ خاص جمٲژ سیتۍ تعلق آسہِ۔ کنہِ کسبس یا ہۅنرِ سیتۍ مخصوص لفظ تہِ چھ اتھۍ دایرس منز یوان۔ مثالہِ پاٹھۍ نِمواسۍ ’’نسخہ‘‘ لۅغاتس منز چھ اَمیک معنے لیوٗکھمت یا لیکھنہ آمت مگر حکیم کتھِ گۅو نسخہ سہ کاغذ پرچہِ یتھ پیٹھ حکیم بیمارس دَوہن بیترِ ہند تفصیٖل لیٖکھِتھ دِیہِ۔ لفظک اصطلاحی معنے چھ عام طور ورگہ معنے آسان اَماپۆز پتہ چھ یۆہے معنے اَمیک ثیقہ معنے بنان ۔‘‘۲؂

حوالہ

۱: واحد:فرہنگِ ج ۔ع۔ ادبیاتِ اردو، ایس۔ ایچ۔ آفسٹ، پرنٹرس، دہلی دوسرا ایڈشن، ۲۰۱۱، صفہ نمبر۱۵۷۔
۲: انہار:سرِیت تہ ادب،(کٲشرِ شاعری منز ورتاونہ آمژ اصطلاحہ)،موتی لال ساقیؔ ، کشمیر یونیورسٹی سرینگر،۲۰۱۵ ؁،صفہ نمبر ۳۴۔

زمرے:Uncategorized

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s