شاعری

غزل – کر ژہ حبسِ دم


رخسانہ جبین

ژھۅپہِ ہنز کرامتھا تہِ وچھکھ کر ژہ حبسِ دم
بدلے سماعتھا تہِ وچھکھ کر ژہ حبسِ دم

یۆدوے ژیہ کتھ کھییتھ نہ وناں گوکھ اورہ کُے
بییہ اکھ قیامتھا تہِ وچھکھ کر ژہ حبسِ دم

پننے بجر ژہ تھاو پننۍ بٲتھ گے سیٹھا
بییۍ سنز شرافتھا تہِ وچھکھ کر ژہ حبسِ دم

وچھکھے ژہ اچھ ٹوِتھ یہ سیہ ٲنہ رٲژ ہند
صبحچ بشارتھا تہِ وچھکھ کر ژہ حبسِ دم

اکھ اکھ ورق پھرکھ تہ پرکھ زن ژہ اکھ کتاب
سنہرۍ عبارتھا تہِ وچھکھ کر ژہ حبسِ دم

مۅچھہِ منز ییی ژیہ زون ہلم تارکو بٔرتھ
سرۍ یک حرارتھا تہِ وچھکھ کر ژہ حبسِ دم

زمرے:شاعری

Tagged as:

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s