افسانہ

جوٚٹھ گوٚو پادشاہ (افسانہ) – ہردے کول بھارتی


ہردے کول بھارتی

اکہِ دۅہہ آو دیس ہنگہ منگہ خیال زِ اسنس گوٚو واریاہ کال۔ دیس چھہ پانس اسُن خۅش کران، اوہ کنۍ گوس ہنا تشویش ہیو۔ ہنا کوٚرن سونچ تہ بنووُن انسان۔ ادہ سہ دۅہ تہ یہ دۅہ۔ تنہ ووتس برابر اسان۔ ییلہ تہِ ہنا تھکھ چھُس گژھان، ہیرہ پیٹھے چھہ بۅن زمینہِ پیٹھ نظر تراوان۔ کینہہ نتہ کینہہ چھہ اسُن لایق ضرور چلان آسان۔ نیلہ چھیس گژھان اسۍ اسۍ۔ پانس چھہ پانے متھہِ متھہِ دوان زِ انسان دپتھ کیا چیز چھم تخلیق کورمت۔

یمنے تخلیقاتن منز دراو اکھا، یس دپان اکبر۔ اکبر دپتھ گوٚو مغل۔

یہ دپز تہِ مغل اعظم۔ دپان چھہِ نا مغل ڈیشتھ گژھہِ فارسی پھورُن۔ یہ اوس تموے منزہ اکھ یس ڈیشتھ فارسی پھوران اوس نہ۔ وۅں گوٚو آسان کانہہ بیربلا یس پھوران چھہ تہ یۅہے چھہ حقیقتا راج تہِ کران، مگر سۅ دلیل چھیہ وکھرہ۔

یتھہ پاٹھۍ دیس اکہِ دۅہہ ہنگہ منگہ خیال آو، بالکل تتھے پاٹھۍ آو اکہِ دۅہہ مغل اعظمس تہِ اچانک خیال تہ پرژھن بیربلس۔ «بیر بل، دپان جوٚٹھ گوٚو پادشاہ!»

بیربلن بوز تہ دیتُن کنہ ڈول۔ جواب ٲسس پے، پوٚز معاملہ اوس ہنا نوزک پہن اوہ کنۍ زونن کٔلس ڈیوٚل لاگنُے جان۔کتھ ڈٲلتھ ووٚتھس۔ «جہاں پناہ میہ زن باسان یہ تان سین چھہ وۅنۍ بیہ سۅرگیٚوان۔ کروس نا وظیفہ بند؟»

کتھ بوزتھ آو ستمہِ اسمانہ دیس ٹھاہ ٹھاہ کران اسُن۔ پوٚز دیہِ سند اسُن، صرف بوز دوتاہو تہ مغل اعظمن نہ کینہہ۔ معمولی راجواڈہ تہِ چھہِ ترکۍ انسان تہ مغل اعظم سنز چھیہ نہ کتھے۔ تس توٚر فکرِ زِ بیربل چھہ کتھ ڈالان۔ تس رود کانہِ تل تہ ہنا بتھ ترکُر کرتھ ووٚتھس: «بیربل ژہ چھکھ کتھ ڈالان تہ یہ چھہ نہ شاہی آداب۔»

بیر بلن ژھُن مغل اعظم سند موڈ وچھتھ کلہ بۅن مگر مغل اعظمن پھیُر پنن سوال دبارہ۔ «بیر بل دپان جوٚٹھ گوٚو پادشاہ؟»

«جناب گوٚو ہے تہ تتھ چھا کینہہ شک زِ۔» بیر بلس ژوٚل ہکہ نیرتھ کینژھا زوہ لرزہ تہ کینژھا نوکری ہندِ امارہ۔

«اچھا؟» اکبرن کٔر بیربل سندس جوابس پیٹھ حیرانی ظاہر۔ «ییلہ جوٚٹھ پادشاہ گوٚو تیلہ کم چھہِ اسۍ، مغل اعظم کُس چھہ، کیا چھہ تیلہ؟»

«حضور تۅہۍ تہِ چھو پادشاہ ہے۔ تاجدار ہند۔» بیر بلن کٔر نار ژھیوراونچ کوشش۔

«تہِ کتھہ پاٹھۍ بنہِ؟» اکبرن کوٚر بییہ سوال تہ ہیرِ آو ستمہِ آسمانہ دیس بییہ ٹھاہ ٹھاہ کران اسُن۔ سہ اوسا بیربل سنزِ بے بسی پیٹھ اسان کنہ اکبر سنزِ بیوقوفی پیٹھ، کنہ دۅشونۍ پیٹھ، اتھ متعلق ثیقہ ونن چھہ ناممکن۔ دیہ سند اسُن، دیی ہیکہِ جواب دتھ!

امہ پتہ کٔر بیربلن پننۍ گردن تہ نوکری بچاوۍ بچاوۍ تہ شاہی آدابن ہندس تدبرس اندر اندر روزتھ ؤلتھ مٔلتھ تس یہ سمجھاونچ پورہ پورہ کوشش زِ جوٚٹھ کتھہ پاٹھۍ گوٚو پادشاہ، تہ بییہ یہ زِ جوٚٹھس تہ مغلس چھہ نہ پانوٲنۍ کانہہ تضاد۔ پوٚز مغل اعظم! شکھچ گژھہِ نہ گنجٲیش روزنۍ۔ تس یوٚت تام نہ ثیقہ ثبوت آسہِ ہے توٚت تام ما مانہِ ہے سہ۔ کافی خۅشکیتھ کھسنہ پتہ کٔر بیربلن ہٲرتھ ژھۅپہ تہ مغل اعظم ووٚتھس ہنا سختی سان۔ «بیربل ہفتچ چھے مہلت۔ ہفتس اندر اندر یزِ ژہ یمہِ سوالک ٹھوس جواب ہیتھ دربارس منز زِ اگر جوٚتھ پادشاہ گوٚو تیلہ کم چھہِ اسۍ؟»

مغل اعظم سند حکم بوزتھ آو ستمہِ آسمانہ دیس ٹھاہ ٹھاہ کران اسُن۔ نیلہ گٔیس اسان اسان۔ مگر بۅنہ گٔیہ بیربلس فرمان بوزتھ گلہِ زیو تہ نٹان نٹان دراو کور نش بجٲوتھ گرہ کن۔

تراوۍ تون یہ سونچس سیتۍ۔ یپارۍ آو ستمہِ اسمانہ دیس بییہ اچانک خیال ۔ دے گوٚو دیی۔ مشتھ چھس نہ کینہہ گژھان۔ سونچا کوٚرن۔ دوٚپن «ہتا یہ انسان بچارہ یوت چھم اسناوان۔ سورے تھکن تہ سٲرے تلخی تہ کریچھر چھم مشراوان۔ اسنز یہ صلاحیت پزِ تسلیم کرنۍ۔ کینہہ حوصلہ افزٲییا پزِ امس کرنۍ۔» دیہ سنز دیہ کتھ۔ تسند خیال ینُے یوت زِ زبردست اہتمام سپد۔ اتھۍ منز سپد انسانس فرمان جاری زِ اشرف المخلوقات چھکھ!! پوٚز ژکہِ انسان دیَن پننہِ اسنہ خاطرہ بنوومت۔ تتان تہِ زیری تہ ترنان تہِ زیری۔ میونڈ کھنڈ گوس زیادہ پھٹنس یوان۔ اشرف المخلوقات آسنچ سند وچھتھے زن آس مژر۔ مونین تٔھون نہ میژ کُنہِ۔ گرا دوٚپن پنزۍ سند اولاد چھس تہ گرا دوٚپن دے کیا تہ بہ کیا۔ سے گوس بہ تہ بے گوس سہ!! زندہ باد تہِ کوُرن پانے تہ مۅرہ باد تہِ۔ زندہ روزنہ چہ ییژہ سبیلہ کجن، تمہ کھۅتہ زیادہ کجن مرنہ چہ۔ یتھے ترییم عالمی جنگ لگہِ مرن والین ہند تعداد روزِ فی منٹ اکھ کرور۔ یی ییلہ دیَن بوز تہ اسۍ اسۍ گٔیس نیلہ۔ پانۍ پانس کوٚرن مرحبا زِ نمونا بنووم!

یموے نمونو منزہ اکھ نمونا چھہ مغل اعظم۔ یہ مغل اعظم کر تہ کتھہ پاٹھۍ سپد رحمت حق تہِ چھہ سارنے پتاہ مگر بیربل کتھہ پاٹھۍ سپد سۅرگواس تہِ چھیہ خالے کٲنسہِ ترکِس خبر۔ سپد یہ زِ بیربل یُتھے کلہ نوٚمرٲوتھ گرہ کُن دراو یہ فکر لٔجس أتھرِ ہندۍ پاٹھۍ اندری کورنہِ زِ ہفتہ ختم گژھتھ کیا دمہ ستمہِ دۅہہ پادشاہس جواب۔ نہ اوسس ژلنس وار تہ نہ گلنس وار۔ امی فکرِ کوٚرنس سکوت۔ نہ رودس کھینس رغبت تہ نہ چینس۔ اصل نا آبہ دانہ مۅکلیمتۍ! کھییہ ہے کسندِ مالہ پیٹھہ۔ بیربلس مۅژیاو یہ دپۍزِ تہِ کونڈے یوت۔ رسہ رسہ دۅہ گٔیہ نکھہ یوان تہ سیتی گوٚو رسہ رسہ بیربل تہِ زوہ رنگۍ پتھ پتھ گژھان۔ ٲخرس آو سہ دۅہ تہِ یمہ دۅہہ بیربلس جواب ہیتھ دربارس منز پیش اوس سپدُن۔ سٲری دربارۍ کیہو امرا گٔیہ سلہِ پیٹھے یمہِ چاوہ دربارس منز حاضر زِ از ہا نیرِ بیربلس سٲرے کٲکل تہ بیربلن تہِ کوٚر پننہ جایہ فیصلہ زِ ژلنہ کھۅتہ چھہ گلنُے بہتر۔ سیدِ سیوٚد دمہ پادشاہس جواب۔ ادہ پتہ الہ گژھن یا وانگن۔ امی ارادہ کٔرن پلنگہ پیٹھہ وۅتھنچ کوشش، مگر فاقو ٲسس نہ سامرتھ تھٲومژ۔ آس تیتھ زِ درس کٔرتھ آو پتھر لاینہ تہ اتھۍ سیتۍ دیتُن امانت۔ پادشاہس یہ ونن اوسس تہِ رودس اندرے۔

اتھ مقامس پیٹھ چھیہ سوچنچ کتھ یہ زِ اتھ واقعس پیٹھ آسیا ستمہِ اسمانہ دیس اسُن آمت کنہ نہ؟ عام خلقن کیا راے چھیہ اتھ متعلق تتھ چھہ نہ کانہہ معنی ۔ دپھ ترکیٚن ہند خیال چھہ زِ دیس آو تیوت اسُن زِ ہلۍ کانین گوس گُرس!! تس کیازِ آو اسُن، تی گوٚو سیر مولا۔ تتھ ما ووت کانہہ؟

ہپارۍ ییلہ بیربل یمہ داٍتر ژنر گپتہ سندس دربارس منز پیش کوٚر۔ امہ برونہہ زِ ژنر گپت کھولہِ ہے تسنز کرمہ بہی، بیربلن کوٚرس گلۍ زہ گنڈتھ عرض زِ مغل اعظم سند چھس نمک خور رودمت، تسندس اکس سوالس رودم جواب دِنے اوہ مۅکھہ گوٚژھ توٚت تام میہ متعلق پریتھ کانہہ فیصلہ ملتوی کرنہ یُن یوٚت تام نہ بہ تسندِ سوالک جواب دِتھ نمک حلالی ہند ثبوت دِمہ۔ عرض بوزتھ رکوو ژنرگپتن اتھہ، بیر بلس کٔرن ہیرہ بۅنہ نظرا، تسنز حالتھ ڈیشتھ آس عارے تہ بہی واپس تھوان ووٚننس۔ «تتھاستو، تی سپدِ۔»

یپارۍ گوٚو مغل اعظم تہِ بیربل سندِ ہیہہ کینژِ کٲلۍ رحمت حق۔ شایان شان طریقس مںز آو ماتم کرنہ تہ شاہی اعزازہ سان آو مغل وڑراونہ۔ نکیر منکر سپدۍ مغل اعظم سنزِ شاہی قبرِ منز ظاہر۔ ملٲیک ڈیشتھ گوٚو مغلس برنزس کھنڈس پانس تہِ فارسی بولن مشتھ۔ پوٚز ٲخرس مغل اعظم! مۅردے زن اوس شاہی تیہہ کوٚت گژھیس۔ جراتس کٲم ہیتھ بوزنٲوِن بیربلُن سورے قصہ ویستارہ سان۔ کتھ بوزتھ سونچ ملٲیکو تہِ زِ پوٚزے چھہ یوٚت تام نہ مغلس سوالس جواب میلہِ توٚت تام روزیس روح در عذاب، پوٚز بیربل سند معاملہ اوس ژنر گپتس نش!! اوہ مۅکھہ لوٚگ کاروایی ہنا زیچھر پہن۔ چھیکرس آیہ دۅشوے اکھ اکس سمکھاونہ یُتھ سینہ صفایی تہِ سپدِ تہ نمک حلالی ہند ثبوت تہِ میلہِ مغلس۔

یہ ملاقات وچھتھ آو دیس ٹھاہ ٹھاہ کران اسُن۔

رسمی خیرپاٹھہ پتہ ووٚتھ مغل بیربلس۔ « بیربل اسہِ اوس نہ ژیہ نش یہ توقع۔ سوالس جواب دنہ بغیرے تٔھوتھ لۅتہِ پاٹھۍ لٔٹ۔ یہ تہِ سوچتھ نہ اسۍ ما روزو پیاران۔»

بیربلن ووٚنس ہنا پشیمان ہیو سپدتھ۔ «تہِ چھیہ نہ دلیل حاکم پناہ! پزر بوزو ینہ یور آس تنہ ووتم تۅہی پراران۔ تہند سوال چھم وچھس پیٹھ زن پہاڑ۔»

«تیلہ دِ جواب۔» مغلن ووٚنس تنگ ہیو یِتھ۔ «ون ہرگاہ جوٚٹھ گوٚو پادشاہ، تیلہ کم چھہِ اسۍ؟»

دپان روح چھہِ زمانہ مکانہ چہ بندشہِ نش آزاد آسان۔ یوٚت یمہِ ساتہ مرضی گژھیکھ توٚت تمہ ساتہ ہیکن گژھتھ۔ تہ واتنس منز چھکھ نہ برنز تہِ لگان۔

«عالم پناہ، ؤلو میہ سیتۍ» ونان ونان کٔر بیربلن عمرِ منز گۅڈنکہ پھرِ شاہی آدابہ نیبر نیرتھ مغل اعظمس نرِ تھپھ تہ پکنووُن پانس سیتۍ۔ مغلن تہِ کوٚرس نہ واد۔ زن ٲس تس خبر زِ کوٚت نییم۔ بیربلن کوٚر جایہ ہند خیالے یوت زِ اچھ ٹیٹواریہ منز واتۍ اوٚبرہ لنگیو پیٹھۍ دۅشوے فلسطین۔ مغل زِ بے000اکی نظرِ توٚرس نقشہ فکرِ۔بیربلن کٔر بیاکھ ٹیٹوارے زِ عراق۔مغل اعظمس ہیوٚتن مطلب تہ منشا سمجس یُن۔ بیاکھ ٹیٹوارے تہ کشیرِ۔قدم ٹھہرٲوتھ ہیژوو بیربلن کیاہ تام ونُن زِ مغلن کٔر ژٹونۍ کتھ۔ «بس سوالس میولم جواب۔۔۔درایہ پھٹھ کتھہِ۔۔۔» ونان ونان آیہ مغلس مرنہ پتہ اشۍ ٹارۍ ۔۔۔مرنہ پتہ!! یہ وچھتھ آو دیس تیوت زورہ اسُن زِ آواز بوز مغلن تہِ۔

زمرے:افسانہ

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s