شاعری

رابرٹ بلیۍ سندۍ غزل تہ اکھ کتھ باتھ


rb

[2000 منز چھپییہ پیرس ریوو رسالس منز رابرٹ بلییس سیتۍ اکھ زیٹھ کتھ باتھ۔ امہ کتھ باتھہِ ہند اکھ حصہ اوس بلیۍ سندین نام نہاد غزلن متعلق۔ بۅنہ کنہ چھہ کتھ باتھہِ ہندِ تمہ حصک ترجمہ حاضر۔ کتھ باتھہ منز سوال پرژھن وول اوس فرانسس قوین۔]

فرانسس: پتمین کم از کم ترین ورین منز ووت ژیہ اکس ہیژ منز نظمہ ونان یتھ اسلامی غزلس سیتۍ تعلق چھہ۔ پیرس رویو کس یتھ شمارس منز چھیہ یژھہ زہ نظمہ۔ یتھے پاٹھۍ چھیہ نیورپبلک، پویٹری تہ اٹلانٹک منتھلی رسالن منز تہِ۔ژہ ونکھہ یمن نظمن متعلق کینہہ؟
رابرٹ: سانۍ اکۍ زامترۍ سنیل دتن، یس جے پورس منز زامت چھہ، وۆن میہ کینہہ وری برونہ کنوہمہ صدی ہندس ہندوستانۍ شاعر غالب سنزہ کینہہ نظمہ ترجمہ کرنہ خاطرہ۔غالب اوس اردوس منز لیکھان یۅس ہندی تہ فارسی زبانن رلتھ بنیمژ چھیہ۔میہ کٔر مزید ترجمہ نہ کرنچ کوشش، مگر پۆتس لگۍ اسۍ اتھ کامہ پیٹھ تہ تسندین ترہن غزلن ہند ترجمہ کۆر مکمل۔ غالب چھہ نہ سیۆد اوسمت۔ ونان چھہ ؂
Their funeral date is already decided
But still people complain they can’t sleep.
غزلہ چہ ہیژ منز، یتھ منز تریو پیٹھہ پنداہ شعرآسان چھہِ،چھہِ زہ غیر معمولی وصف۔ شاعر ہیکہِ پریتھ شعرس ستۍپۆت منظر بدلٲوتھ۔اکھ شعر ہیکہِ لولہ نظم ٲستھ، دۆیم ہیکہِ حکمت ٲستھ، ترییم ہیکہِ شاعر سنزِ نجی زندگی ہنز شکایت ٲستھ۔ دۆیم وصف چھہ زِ شاعر چھہ نہ نظمہ ہند موضوع بیان کران۔ سانس روایتس منز ونہِ شاعر Come live with me and be my love تمہ پتہ پکناوِ شاعر اتھۍ استدلالس برونہہ۔ نظم گژھہ یتھہ پاٹھۍ شروع Something there is that doesn’t love a wall ۔ فراسٹ کرِ دلیلہ، صرژہ تہ لۅکٹۍ واقعہ شامل یۆت تام موضوع پورہ گژھہِ۔

فرانسس: مگر فراسٹ چھہ اکۍسے نظمہ منز واریاہ جذبہ بران۔
رابرٹ: سہ چھہ تہِ کران، پزۍ پاٹھۍ۔اسہِ چھیہ پتاہ فراسٹس چھہ یقین زِکایناتس منز چھیہ اکھ قوت یۅس دیوارن مسمار کرنۍ یژھان چھیہ۔ اتھ پیٹھ چھہ تس سرۆن اعتماد۔مگر ستی چھہ تس یمہِ کتھہِ ہند تہِ سرۆن احساس زِ اسۍچھہِ کتھہ تام پاٹھۍ اکس تنہایی زدہ تہ خطرناک کایناتس منز زونہ خاطرہ ترٲوتھ ژھننہ آمتۍ۔ فراسٹس چھہ اندرۍ یمہِ کتھہِ ہند تہِ اقرار زِ رشتک احساس ہیکہِ دۅن شخژن درمیان تیوت مظبوط ٲستھ زِییلہِ تم اکس پہاڑس کھسن تتہ اگر تمن کانہہ نرہرن تہِ وچھہ سہ تہِ ہیکہِ یہ رشتہ محسوس کرتھ۔ یم احساس چھہِ فراسٹ سنزن ترین نظمن منز باونہ آمتۍ مگر غزلہ کس روایتس منز گژھن یم ساری احساس اکۍسے شعرس منز بیان۔

فرانسس: امیک مطلب گۆو زِ پرن والس چھیہ ژر محنت کرنۍ پیوان۔ ییلہِ نظمہ ہند موضوع بیان آسہِ نہ سپدمت، بوزن والس چھیہ زیادہ محنت کرنۍ پیوان۔ شاید چھیہ امہِ قسمچ نظم سانین نظمن برعکس بوزن والۍ سندزیادہ توجہ منگان ییلہ تم پرنہ آسن یوان۔
رابرٹ: بلا شک۔غزلچ زبان تہِ چھیہ زٲنتھ مٲنتھ پیچیدہ۔ عام پاٹھۍ چھہ غزلک تعلق تربیت یافتہ شاعری سیتۍ یتھ منز باقے شاعرن تہ غزلن ہندۍواریاہ حوالہ چھہِ۔اسۍ ہیکو ونتھ زِ پریتھ صرژ چھیہ مبالغہ یس تضادک احساس دوان چھہ۔لہذا چھہ غزلک شعراکھ طلسم خانہ ییتہِ متضاد کتھہ بیان ہیکن سپدتھ۔

فرانسس: غزل چھا شاہانہ دنیاہچ پیداوار؟
رابرٹ: غزل لفظک معنے چھہ لولہ نظم۔ امیک ابتدا چھہ عربی یس اندر لولہ نظمہ ہنزِ صورژ منزے سپدمت۔ اتھ ہیژ دیت وہراو ایرانیو۔غزلک مزید ارتقا سپد بہمہِ صدی ہندس ایرانس تہ ہندوستانس منز۔ مگر یہ ہیت چھیہ ونہِ اسلامی دنیاہس منز ورتاونہ یوان۔ غزلچ روایت چھیہ کینژھا صوفین نش میلان یم دنیاوی وراثت نس بیہ تعلق چھہِ۔ سنایی چھہ ونان اگرکانہہ پانژن دۅہن غذا وراے روزتھ ہیکہِ نہ تس پزِ نہ صوفی آسنک دعوا کرن۔ یہ گے نہ شاہانگی۔ یہ چھہ نہ معمول تہِ۔ژہ کیا چھکھ اتھ نظمہ متعلق پرژھان؟

فرانسس: میانہ خیالہ یمن غزلن ہند ژیہ ذکر کۆرتھ تمن ہندِ خاطرہ گژھہِ سیٹھا مطالعہ آسن۔
رابرٹ: تہِ چھہ پۆز۔ اسہ چھیہ یژھن نظمن ہنز ضرورت۔ یوت مالدار ادبی تہ تمدنی پۆت کال ٲستھ سہ نظرانداز کرنک کیا فایدہ چھہ؟

فرانسس: گۆو غزل چھہ نہ آزاد شاعری۔
رابرٹ: بلکل نہ۔ میہ کۆر عرض زِ غزل چھہ پریتھ شعرس منز نوین موضوعن کن وۅٹہ تلان۔ یہ چھیہ پانہ اکھ بیہ لگام ہیت۔مگر ستی چھہِ اتھ منز تابعداری ہندۍ سیٹھا اصول تہِ یم امچہ خۅدسری منز توازن پیدہ کران چھہِ۔مثلا ردیفچ بندش۔ گۅڈنکۍ زہ مصرعہ چھہ ردیفک اعلان کران مثلا’’ راتھ‘‘ یا اکھ لفظ یمیک معنے ’’سانہ خاطرہ چھہ کافی ‘‘ چھہ۔ غزلک پریتھ شعر چھہ اتھۍ لفظس پیٹھ ختم گژھان۔ دلچسپ کتھ چھیہ یہ زِ شعرس منز ییلہ یہ لفظ ’’راتھ‘‘ یوان چھہ ، باسان چھہ یہ زن چھہ پانس سیتۍ اکھ عالم ہیتھ یوان۔ امہِ لحاظہ چھہ یہ قافیہ نش الگ۔حافظ سند اکھ غزل چھہ یمیکہِ ردیفک ترجمہ گژھہ enough for us۔ * ؂
The shadow of a tall cypress in a meadow is enough for us
تہ برونہہ کن چھہ ونان ؂
You have seen the cash flow and the world’s suffering
If that profit and loss is not enough for you, for us it’s enough.
’ما را بس‘ ونتھ چھہ سہ تمام سماجک حوالہ دوان تہ یتھہ پاٹھۍ چھہ سورے سماج نظرن منز یوان ییلہ شعر اتھ لفظس پیٹھ ختم گژھان چھہ۔پرن والس چھیہ پتاہ آسان زِ یہِ لفظ ییہِ دہراونہ ۔ سہ چھہ حض تلان ییلہِ یہ لفظ پریتھ شعرس منز رژھ کھنڈ جدا پاٹھۍیوان چھہ۔ امہِ علاوہ چھیہ غزلس منز قافیہ تہ وزنچہِ بندشہِ تہِ۔مگر ردیف چھہ سانہِ خاطرہ اکھ عجیب عنصر۔

فرانسس: میہ چھیہ پتاہ ژیہ چھتھ واریاہ نظمہ یاد کرِمژہ۔ ژہ کرکھہ کانہہ نۆو غزل پرنک تکلیف ؟
رابرٹ:
Some love to watch the sea bushes appearing at dawn,
To see night fall from the goose’s wings, and to hear
The conversations the night sea has with the dawn.
If we can’t find Heaven, there are always bluejays.
Now you know why I spent my twenties crying.
Cries are required from those who wake disturbed at dawn.
Adam was called in to name the Red-Winged
Blackbirds, the Diamond Rattlers, and the Ring-Tailed
Raccoons washing God in the streams at dawn.
Centuries later, the Mesopotamian gods,
All curls and ears, showed up; behind them the Generals
With their blue-coated sons who will die at dawn.
Those grasshoper-eating hermits were so good
To stay all day in the cave; but it is also sweet
To see the fenceposts gradually appear at dawn.
People in love with the setting stars are right
To adore the baby who smells of the stable, but we know
That even the setting stars will disappear at dawn.
اسۍ ہیکو ونتھ پریتھ شعرس منز چھہ شاعر اکس نوس گُرس پیٹھ سوار سپدان۔مگر پتہ چھہ سوار پریتھ شعرہ کس ٲخرس پیٹھ گُرِ پیٹھہ بۅن وسان تہ پرن والۍ سند اتھہ رٹان۔یہ چھہ تمہِ بیہ لگام خۅدسری خاطرہ توازن پیدہ کران یتھ تہِ کرتھ پرن والۍ سند لحاظ چھہ، تہ یتھ اندر تقریبا خۅش خلقی چھیہ۔

فرانسس: ژیہ کۆرتھ فارسی یک دۅن مصرعن ہند شعر ترین مصرعن منز تبدیل کرنک فیصلہ۔ تہِ کیازِ؟
رابرٹ: فارسی تہ عربی دۅشونی منز چھہ شاعر عام طور شراہن یا ارداہن ہیجلین ہندۍ مصرعہ گنڈان۔لہذا اگر ارداہن ہیجلین ہندزہ ۍ مصرعہ آسن، شعر چھہ شیترہن ہیجلین ہند بنان۔ اتھ برعکس چھہ انگریزی یس منزعام مصرعہ، مثلا سانیٹس منز،دہن ہیجلین ہند آسان۔ انگریزی یس منز چھہ ارداہن ہیجلین ہند مصرعہ بیہ ڈول گژھان۔اگر تمہِ بدلہ کہن یا بہن ہیجلین ہندۍ تریہ مصرعہ ورتاونہ ین، اسۍ چھہ تمنے شیترہن ہیجلین تام واتان۔ میہ چھہ باسان اسلامی ادیبو اوس محسوس کۆرمت زِ شیترہہ ہیجلۍ چھہ اظہارک کارآمد تہ مکمل کُن۔امہِ استدلالہ کنۍ ووتس بہ ترین مصرعن پیٹھ۔

فرانسس: میانہِ خیالہ چھیہ یہِ نٔو نظم بیہ حد دلچسپ۔نظم چھیہ یتھ کتھہِ کن تہِ اشارہ کران زِ کھسونہِ وانسہِ باوجود ہیکہِ بیہ لگامی اسہِ سیتۍ روزتھ۔غزلہ چہِ بیہ لگامی تہ ہیژ ہندخاص امتزاج چھہ وہہ وہرس نسبت ستتھہ وہرس زیادہ مناسب باسان۔
رابرٹ: یمن لفظن منز چھہ چون محبت۔


رابرٹ بلیۍ سندۍ ژور غزل

(1)
یمہ شبہ ابراہیمن تارکن ناد لوے

یاد چھے شب ییلہ ابراہیمن گۅڈنچہ لٹہِ وچھۍ
تارکھ؟تمۍ لاۍ زحلس کن آواز : ’’ژے چھکھ سون خۅداے!‘‘
کوتاہ خۅش اوس! ییلہ تمۍ صبحک تارکھ وچھ
تمۍ لوے صدا’’ژے چھکھ سون خۅداے!‘‘ کوتاہ وجارہ سپد
ییلہ تمۍ وچھۍ تم لوسان۔ یارو، سہ چھہ اسہِ ہیو
اسۍ چھہ بناوان لوسہ ونین سیارن پنن خۅداے ۔
اسۍ چھہ بیہ پژھ ستارن وفاداری ہندساتھ دوان۔
اسۍ چھہِ کھاشۍ ،میژ کھنن والین ہونین ہندۍ پاٹھۍ۔ اسہِ چھیہ خوشی سپدان
ییلہ اسہِ میژ پتمیو پنجو کنۍ اسمانس کھسنک احساس گژھان۔
کس ہیکہ اسہِ بیہنٲوتھ زِ رب چھیہ نہ جان۔
یہ چھیہ بس سانۍ میژ تچھونۍ ہونین ہنز خصلت یس یتھہ کنۍ سونچان چھیہ۔
اسۍ چھہ پننۍ باقے سارے زندگی ربہِ کھۅربانوزونس پیٹھ تیار
ادرین میدانن منز پکۍ پکۍ ۔
اسۍ چھہِ جلاوطنن ہنزِ شکلہِ سرپھہ سندس قلمروس منز۔
اسۍ چھہ گنڈہ ڈورین منزاستادہ ہیۆرکن شبس وچھان۔
یہ میون دل چھہ دۅہس منز لۆت سۆت ٲلوہیو تہ راتس
اۆش ہارن واجنہ منساونہ آمژِ زنہِ ہندۍ پاٹھۍ۔ یارہ ونم کیا کرہ
تکیازِ، بہ چھس لوسونین سیارن ہندس لولس منز ہینہ آمت زۆن۔

(2)
سوال تہ جواب

ونم اسۍ کیازِ چھہ نہ ازکل آواز تلان
تہ شور تلان تتھ پیٹھ یہ کینژھا سپدان چھہ۔تۅہہ وچھوہ
عراق کہ خاطرہ چھہ تیاری سپزمژ تہ بالن پیٹھ چھہ یخ ویگلان؟

بہ چھس پانۍ پانس ونان: ’’کر، صدا کر۔بالغ آسنک
کیا مطلب ییلہ کانہہ آواز تہِ نیرِ نہ؟ لاے صدا!
وچھ کس دیہ جواب! یہ چھہ سوال تہ جواب!‘‘
اسہِ پییہِ خاص طور بڈِ ہٹہ صدا لاین سانین
فرشتن تام واتنہ خاطرہ یم گۆب بوزان چھہِ۔
تم چھہ ژورِ روزتھ ژھۅپہِ ہندین جگن منز یم سانین جنگن دوران برنہ چھہِ آمتۍ
اسہِ چھیہ ییتین جنگن ہنز منظوری دژمژ زِ اسہِ چھہ نہ
ژھۅپہِ نش کانہہ تہِ مفر؟اگر اسۍ پننۍ آواز تلو نہ، اسۍ دمو باقین موقعہ
(یم اسی چھہِ) گرس نقب دنک
اسۍ کتھہ پاٹھۍ ٲسۍ بڈین صدا لاین والین کن کن داران
— نرودا، اخماتووا، تھورو، فریڈرک ڈاگلس– تہ وۅنۍ
چھہ اسۍ ژرین ہندۍ پاٹھۍ کلۍ دۅپھن منز خاموش؟
صوفین ہند گف چھہ زِ سانۍ زندگی چھیہ ستن دۅہن ہنز
ہفتہ کس کتھ دۅہس منز چھہِ اسۍ ؟ از چھا بریسوار؟
جلدی کرو، صدا لایو! آتھوارِ ہند شب پییہ جلدے وٲتتھ۔

(3)
شبستری تہ گلشن راز

بہ ہیکہ نہ شبستری سندۍ تعریف کرتھ تھکتھ امہِ مۅکھہ
زِ تمۍ انۍ مہۍ سنزہ تہ ہسۍ سنزہ زنگہ اکھ اکس نکھہ۔
امہ پتہ چھس بہ آتھوار ژندروارِ نزدیک اننۍ یژھان۔
فرض کرو اکس گاسہ تلس تگہ ہے واوس ستۍ نیتھر کرن۔
تۅہہ چھو نا تم جان نیتھر وچھمتۍ ییلہ
واو تہ کۆش وتہِ یکہ وٹہ بۅن وسان چھہِ۔
ییلہ میہ نظم تتھ جایہ واتناوان چھیہ ییتہ
کانہہ واقعہ چھہ نہ دۅیہ لٹہِ ظاہرسپدان،بہ چھس ژھانڈان
اکھ وشن کمرہ تہ تفکرن ہندۍ ساس وری۔
کانراڈن وۆن زِ کرہن تیراک ووت جہازس تام۔
اگر اسۍ تتھ دۅکھس منز غۅطہ دمو یس اسہ موافق آسہِ
سانین خوابن منز آسہِ تہِ سورے یمہ خاطرہ آدم تہ حوا ودنس آے۔
عجیب واقعہ چھہِ سپدان۔
اکہ صبح چھہ کیرکیگارڈسمجاوان زِ ناراضگی کتھ ونو
تہ گگر چھہ کمرس منز پریتھ کانسہ ستۍ نیتھر کرن قبول کران۔
رابرٹ چانۍ یم تھدۍ حوصلہ چھہ نہ ثابت کران زِ ژہ کیا
چھکھ پزرک قریبی دوست۔مگرژیہ چھتھ پننۍ بگۍ
انسانہ سندِ دۅکھہ چین مرگن منز چلاونۍ ہیچھمژ۔

(4)
قلعہ منزہ کھنڈ ژورِ نین

اسۍ چھہِ غریب طالب علم یم سکولہ پتہ سکولس منز ٹھہرتھ چھہِ پران خوشی
اسۍ چھہِ ہندوستان کین بالن ہندین تمن جاناوارن ہندۍ پاٹھۍ
بہ چھس سۅ مۅنڈ یمۍ سند شر چھہ تسنز کنی خوشی۔
اکوے چیز یس بہ پننس رییہ کلس منز رٹتھ چھس
چھہ مدریر کہ قلعہ کہ معمار سند نقشہ
مدریرک صرف اکھ پھۆل ژورِ ننس منز چھیہ سۅ خوشی۔
جاناوارن ہندۍ پاٹھۍ چھہِ اسۍ انہ گچہ منزہ وپھ تلتھ اکس دیوان خانس اژان
یس نغمگی ستۍ روشن چھہ، تہ پتہ چھہِ وپھ تلتھ واپس نیران۔
وشنہِ دیوان خانہ منزہ نیبربند گژھنس منز تہِ چھیہ خوشی۔
بہ چھس کاہل، آوارہ، تہ احمق مگر میہ چھہ خۅش کران
تمن متعلق پرن یمو بتھیک اکھ جلوہ وچھ
تہ تمہ پتہ مودۍ وہہِ وہرۍ بصد خوشی۔
میہ چھہ نہ کانہہ ہرجہ اتھ چانس وننس منز زِ بہ مرہ جلدے۔
جلدے لفظہ چین آوازن منز چھس بہ بوزان
لفظ ژہ ،یمہ ستۍ شروع گژھان چھہ پریتھ سہ جملہ یتھ منز چھیہ خوشی
’’ژہ چھکھ ژور۔‘‘ منصفن وۆن۔ ’’اسۍ وچھوکھ
چانۍ اتھہ۔‘‘ میہ ہاوۍ عدالتس منز پننۍ مسلہ مۆٹۍ اتھہ۔
میون سزااوس ساسن ورین ہنز خوشی۔

[ترجمہ: منیب الرحمن]

زمرے:شاعری

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s